اکاؤنٹس کمیٹی نے نیب کی آڈٹ رپورٹس طلب کر لیں،چیئرمین کو بلانے کا عندیہ

  اکاؤنٹس کمیٹی نے نیب کی آڈٹ رپورٹس طلب کر لیں،چیئرمین کو بلانے کا عندیہ

  



اسلام آباد(آئی این پی)پارلیمنٹ کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے آڈٹ حکام سے قومی احتساب بیورو (نیب)کی آڈٹ رپورٹس طلب کرلیں،جبکہ پرائیوٹائزیشن کمیشن کی جانب سے مختلف بینکوں میں خلاف ضابطہ پانچ ارب 72 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کئے جانے کے معاملے کی چار ہفتوں میں انکوائری کرانے کی ہدایت کی ہے،کمیٹی نے نجکاری کمیشن کی کارکردگی پر بھی آڈٹ حکام سے بریفنگ طلب کر لی،چیئرمین کمیٹی رانا تنویر حسین نے کہا کہ کسی دن چیئرمین نیب کو بلاتے کہ وہ پی اے سی کی جانب سے بھیجے گئے کیسز پر بریفنگ دیں، جب بھی کوئی سیاسی کیس ہوتا ہے تو انکوائری ہفتوں میں کرلی جاتی ہے۔جمعرات کو پارلیمنٹ کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس چیئرمین رانا تنویر حسین کی صدارت میں ہوا،جس میں نجکاری ڈویژن کے2012-13 آڈٹ اعتراضات کا جائزہ لیا گیا،آڈٹ حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ پرائیوٹائزیشن کمیشن کی جانب سے مختلف بینکوں میں 5728 ملین روپے کی خلاف ضابطہ سرمایہ کاری کی گئی، جوکہ یہ نہیں کر سکتے تھے،سیکرٹری نجکاری ڈویژن نے کہا کہ اس معاملے کی انکوائری ہونی چاہیے، چیئرمین کمیٹی رانا تنویر حسین نے کہا کہ اس کی انکوائری پہلے ہی ہونی چاہیئے تھی۔

اکاؤنٹس کمیٹی

مزید : صفحہ آخر