سوئی نادرن گیس میں نئے کنکشنوں کی فراہمی محال‘ سائلین خوار

  سوئی نادرن گیس میں نئے کنکشنوں کی فراہمی محال‘ سائلین خوار

  



ملتان (سٹاف رپورٹر) 3سال کا عرصہ گزرنے کے باوجود ہزاروں سائلین کو سوئی گیس کنکشن نہ مل سکے۔ سوئی گیس دفتر کے چکر پر چکر لگانے پر مجبور ہو گئے۔ بتایا گیا ہے کہ سوئی گیس ناردرن میں نئے کنکشنوں کی فراہمی محال ہو کر رہ گئی ہے۔2017میں درخواستیں جمع کرانے والے سائلین کو بھی تاحال کنکشن نہیں مل سکے ہیں اور وہ بے چارگی کے عالم میں سوئی گیس دفاتر کے دھکے کھانے پر مجبور ہو چکے ہیں۔سائلین کے رابطہ کرنے پر عملہ جواب دیتا ہے کہ”ابھی آپ کی باری نہیں آئی“ اس صورتحال میں سائلین شدید مشکلات اور(بقیہ نمبر44صفحہ7پر)

پریشانی کا شکار ہو چکے ہیں اور وہ سوئی گیس کنکشن کے لئے در بدر پھر رہے ہیں مگر ان کی کوئی شنوائی نہیں ہو رہی ہے‘ سوئی گیس آفس میں ٹاؤٹ گھوم رہے ہیں جن سے معاملات طے کرنے والوں کو کنکشن مل جاتے ہیں جبکہ رشوت دینے سے انکار کرنے والوں کو دھکے کھانا پڑتے ہیں۔سائلین نے سوئی ناردرن گیس کے اعلی ٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ صورتحال کا نوٹس لیں اور سوئی گیس کنکشنوں کی فراہمی کو یقینی بنائیں۔ سائلین کے مطابق وہ ا س سلسلے میں وزیر اعظم سٹیزن پورٹل پر بھی درخواستیں دے چکے ہیں مگر پھر بھی شنوائی نہیں ہو رہی ہے اور ایل پی جی 200روپے فی کلو تک فروخت ہوئی ہے اور اس وقت بھی اس کی قیمت130روپے فی کلو ہے‘ اس صورتحال میں شدید مسائل نے گھیر لیا ہے۔اس حوالے سے رابطہ کرنے پر سوئی گیس حکام نے بتایا کہ اس وقت اپریل2017میں جمع ہونے والی درخواستوں پر ڈیمانڈ نوٹس جاری کئے جا رہے ہیں۔ گزشتہ سال اوگرا کی طرف سے مقررکردہ سوئی گیس ناردرن ملتان ریجن میں نئے کنکشنوں کا کوٹہ 33ہزار تھا جو اپریل میں ہی مکمل ہو گیا جس کے بعد جولائی تک نئے کنکشن جاری نہیں کئے گئے۔ اس سال نئے کنکشنوں کا کوٹہ کم ہوکر 30ہزار کنکشن رہ گیا ہے‘جس پر آن لائن سسٹم کے تحت کنکشن جاری کئے جا رہے ہیں۔تمام کام اوگراکے سسٹم کے تحت ہو رہا ہے‘ حکومت کا کہنا ہے کہ ملک میں سوئی گیس کے ذخائر تیزی سے کم ہو رہے ہیں‘ اس لئے نئے کنکشنوں پر آئے روز پابندی لگا دی جاتی ہے۔ارجنٹ کنکشن کا کوٹہ 10فیصد ہوتا ہے‘وہ پورا ہونے کے بعد ایک بھی ارجنٹ نیا کنکشن نہیں لگ سکتا ہے۔

گیس کنکشن

مزید : ملتان صفحہ آخر