دینی مدراس کا اسلامی نظام کے نفاذمیں کلیدی کردار ہے، سینیٹرعطاء الرحمان

دینی مدراس کا اسلامی نظام کے نفاذمیں کلیدی کردار ہے، سینیٹرعطاء الرحمان

  



تحت بھائی (تحصیل رپورٹر ) جمعیت علماء اسلام کے صوبائی امیر سینیٹر مولانا عطا الرحمان نے کہاہے کہ دینی مدارس اسلام کی اساس ہے جو ملک میں اسلامی نظام کے نفاذ میں اہم کردار ادا کررہے ہیں۔حکومت اگر مدارس کو سہولیات نہیں دے سکتی تو مزید تنگ بھی نہ کریں۔مدارس کا تحفظ ہماری اولین ترجیحات میں شامل ہے۔حکومت آٹے اور چینی بحران کے خاتمے پر توجہ دیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مردان کے مختلف مدارس کے دورے کے موقع پر کیا۔صوبائی جنرل سیکرٹری مولانا عطا الحق درویش،ضلعی امیر مولانا محمد قاسم،ضلعی جنرل سیکرٹری مولانا امانت شاہ حقانی،سیکرٹری اطلاعات مولانا قیصر الدین اور دیگر بھی ان کے ہمراہ تھے۔انہوں نے رستم،شہباز گڑھی، طورو،نرشک، بخشالی،شیر گڑھ،کاٹلنگ میں دینی مدارس کے دورے کئے اور وہاں کے منتظمین سے بات چیت کی اور انہیں حکومت کے مذموم عزائم سے آگاہ کیا۔سینیٹر مولانا عطا الرحمان نے کہاکہ دینی مدارس کے تحفظ کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا۔2فروری کو تحفظ دینی مدارس کانفرنس پشاور میں منعقد ہو گا جس میں صوبے بھر کے مدارس کے ممتہمین شرکت کر کے حکومتی ایجنڈے کو ناکام بنائیں گے۔انہوں نے کہاکہ آٹا اور چینی بحران حکومت کی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔غریب عوام دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں لیکن حکمران ٹس سے مس نہیں ہو رہے۔انہوں نے کہاکہ وزیر اعلیٰ اور وزراء کا ایک دوسرے پر کرپشن کے الزامات اس بات کی عکاسی کرتی ہے کہ صوبے میں کرپشن کا بازار گرم ہے اور کوئی پرسان حال نہیں ہے۔نیب اور احتساب کے دیگر ادارے نے بھی خاموشی اختیار کر لی ہے۔انہوں نے کہاکہ مدارس اسلام کے مضبوط قلعے ہیں او ر ملک میں اسلامی نظام کے نفاذ کے لئے روز اول سے کوشاں ہیں۔لادینی قوتیں پاکستان سے مدارس کو ختم کرنے اور انہیں اپنے زیر آثر لانے کے لئے کوششوں میں مصرو ف ہیں لیکن ان کی کوششوں کو کسی بھی صورت کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔صوبائی امیر نے کہاکہ 2فروری اتوار کے رو ز صبح نو بجے پشاو ر میں تحفظ دینی مدارس کانفرنس منعقد ہو گا جس سے مرکزی امیر مولانا فضل الرحمان اور دیگر اہم قائدین خطاب کریں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر