پاکستان میں اپنی نوعیت کا پہلا یوتھ سینیٹیشن سمٹ کرانے کا اعلان

پاکستان میں اپنی نوعیت کا پہلا یوتھ سینیٹیشن سمٹ کرانے کا اعلان

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے بلدیات کامران بنگش نے صوبے میں پینے کے صاف پانی،نکاسی آب اور اس سے متعلقہ امور کو جدید تحقیق اور سائنسی اصولوں کی بنیاد پر استوار کرانے کے لئے یوتھ سینیٹیشن سمٹ کا اعلان کیا ہے۔ لوکل گورنمنٹ سیکرٹریٹ پشاور میں واٹر اینڈ سینیٹیشن سیل خیبرپختونخوا اور یونیسیف کے ایک اعلیٰ وفد کے ساتھ خصوصی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کامران بنگش نے ریمارکس دئیے کہ اب وقت آگیا کہ بلدیات اور دیہی ترقی سے متعلقہ امور کے لئے جدید اور سائنسی طریقہ کار کو ڈھونڈا جائے اور اسے قابل عمل بنا کر خدمات کی فراہمی بہتر بنائی جائے۔ یوتھ سینیٹیشن سمٹ مارچ کے مہینے میں منعقد کیا جائے گا جس میں ملکی غیر ملکی محققین کی ریسرچ، ماہرین کی تجاویز اور ماڈلز کو پیش کیا جائے گا۔ تمام ان افراد کے لئے کھلی دعوت ہے جو اس حوالے سے ترجیحات رکھتے ہوں۔ اس موقع پر لوکل کونسل بورڈ خیبرپختونخوا کے ایڈیشنل سیکرٹری اور واٹر اینڈ سینیٹیشن سیل کے کوآرڈینیٹر سید رحمان اور یونیسیف کے واش ایکسپرٹ سجاد نے نکاسی آب، صاف، پانی اور اس سے متعلق امور بارے تفصیلی بات چیت ہوئی۔ صوبے میں نکاسی آب صاف، پانی اور پاک صاف ماحول کی اہمیت پر بات کرتے ہوئے معاون بلدیات کامران بنگش نے کہا کہ اس وقت صوبے میں محکمہ بلدیات کو صحت مندانہ ماحول فراہم کرنے کے سلسلے میں کئی ایک چیلنجز کا سامنا ہے، لیکن حکومت کی کوشش ہے کہ اسے بین الاقوامی اداروں اور عوام کے ساتھ مل کر حل کرے۔ اس سلسلے میں جدید سوچ اورآئیڈیاز کو اپنا رہے ہیں۔ خدمات کی بہترین فراہمی بارے محکمہ بلدیات سائنسی اور ٹیکنالوجی کی بنیاد پرآگے پیش رفت کو ترجیح دے گی۔سمٹ کی اہمیت اور مقصد پر بات کرتے ہوئے کامران بنگش نے کہا کہ یہ پاکستان میں اپنی نوعیت کا پہلا سمٹ ہوگا، کیونکہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کی خواہش ہے کہ سال 2020 تک ہر صورت پاکستان دیرپا ترقی کے اہداف حاصل کر سکے اور اس سلسلے میں محکمہ بلدیات کا کردار بہت واضح ہے۔ انہوں نے کہا اس دو روزہ سمٹ کے ذریعے اکیڈیمیا، ریسرچرز، ماہرین اور دیگر سٹیک ہولڈرز کو ایک جگہ اکٹھا کرنے سے محکمہ بلدیات میں اصلاحات اور کارکردگی مزید بہتر بنانے کے لئے راہ ہموارہو گی

مزید : پشاورصفحہ آخر