ہمیں سماجی برائیوں سے لڑنے والی پولیس چاہیے، سندھ ہائیکورٹ

ہمیں سماجی برائیوں سے لڑنے والی پولیس چاہیے، سندھ ہائیکورٹ

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ پولیس کے ڈی آئی جی خادم حسین اورایس ایس پی ڈاکٹر رضوان کے تبادلوں کے خلاف درخواست پر سندھ ہائیکورٹ کی جانب سے تحریری حکم جاری کردیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ سماجی برائیوں سے لڑنے والی پولیس چاہیے، اقربا پروری پرتقرری والی پولیس نہیں۔سندھ ہائیکورٹ کے جسٹس محمد علی مظہر کی جانب سے تحریر کردہ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ اچانک عہدے سے ہٹا دینے کا عمل بے چینی پیدا کرتا ہے، ایمانداری، اچھا برتاؤ اچھی پولیس کے لیے ضروری ہے۔فیصلے میں کہا گیا یہ ضروری نہیں ہے کہ متاثرہ اہلکار ہی درخواست دائر کرے بلکہ کوئی بھی شخص مفاد عامہ کی خاطر درخواست دائر کرسکتا ہے۔تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ اچھی پولیس اور بری پولیس معاشرے میں وزن اور اہمیت رکھتے ہیں، اچھی پولیس کیلئے افسران کی میرٹ پر تقرری ضروری ہے۔سندھ ہائیکورٹ نے فیصلے میں مزید کہا کہ اچھی اور ایماندار پولیس ہی سماجی برایؤں سے لڑ سکتی ہے، حکومت اچھے قانون پر عمل درآمد نہ کرائے تو لاقانونیت اور بگاڑ پیدا ہوگا۔واضح رہے کہ ممتاز سماجی رہنما جبران ناصر کی جانب سے سندھ ہائیکورٹ میں ڈی آئی جی خادم حسین رند اور ایس ایس پی ڈاکٹر رضوان کے تبادلے کے خلاف درخواست دائر کی گئی تھی جس پر عدالت نے گزشتہ روز فیصلہ سناتے ہوئے دونوں افسران کا تبادلہ غیر قانونی قرار دیا تھا۔

مزید : صفحہ اول