نوجوان کوآگ لگانے کا ڈراپ سین ، آگ دراصل کیسے لگی؟ اعتراف کرلیا

نوجوان کوآگ لگانے کا ڈراپ سین ، آگ دراصل کیسے لگی؟ اعتراف کرلیا
نوجوان کوآگ لگانے کا ڈراپ سین ، آگ دراصل کیسے لگی؟ اعتراف کرلیا

  



پاکپتن(ویب ڈیسک)رقم لین دین کے تنازعہ پر نوجوان ٹیلر کے چہرے پر پیٹرول چھڑک کر آگ لگانے کے واقعہ کا ڈراپ سین، نوجوان ذیشان ولد اسلم نے دوست اور کزن کیساتھ ملکر خود ہی آگ لگا کر ٹک ٹاک بنائی، ٹک ٹاک ویڈیو بھی سامنے آگئی، نوجوان ذیشان نے پولیس کو بیان دیا کہ ٹک ٹاک بناتے ہوئے میرا چہرہ جھلس گیا تھا، معاملہ چھپانے کے لئے آگ لگانے کا الزام شاہد نامی نوجوان پر لگا دیا، یہ بات والد سے بھی چھپائی، ذیشان نے پولیس کو اشٹام پیر پر اپنا تحریری بیان بھی دے دیا۔

ایس ایچ او تھانہ سٹی انسپکٹر کمال ناصر نے بتایا کہ ذیشان پر پیٹرول چھڑک کر آگ لگانے کے واقعہ کا مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کی تو نوجوان کی جانب سے ٹک ٹاک بنانے کا انکشاف ہوا، اس مقدمہ کے ملزم شاہد کو بھی گرفتار کر لیا گیا تھا، ٹک ٹاک سمیت تمام معاملات کی مزید تفتیش ابھی جاری ہے، یاد رہے کہ تین دوز قبل البدر کالونی کے رہائشی محمد اسلم نے رقم کی لین دین کے تنازعہ پر اپنے بیٹے پر پیٹرول چھڑک کر آگ لگانے کے الزام میں شاہد اور دو نامعلوم ساتھیوں سمیت تین افراد کے خلاف مقدمہ درج کرایا تھا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /پاکپتن