اتحادی کو سوکن نہیں سمجھنا چاہئے،ہم چاہتے ہیں کہ حکومت چلے اور اپنی مدت پوری کرے:چوہدری پرویز الٰہی

اتحادی کو سوکن نہیں سمجھنا چاہئے،ہم چاہتے ہیں کہ حکومت چلے اور اپنی مدت پوری ...
اتحادی کو سوکن نہیں سمجھنا چاہئے،ہم چاہتے ہیں کہ حکومت چلے اور اپنی مدت پوری کرے:چوہدری پرویز الٰہی

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ق کے مرکزی رہنما اور سپیکر پنجاب اسمبلی  چوہدری پرویز الٰہی نے کہا ہے کہ اتحادی کو سوکن نہیں سمجھنا چاہئے،  ہم نیک نیتی کے ساتھ چلتے ہیں، چاہتے ہیں کہ حکومت چلے اور اپنی مدت پوری کرے، تحریک انصاف، پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن کے ساتھ سیاسی اتحاد کے ضمن میں مختلف تجربات ہوئے، پیپلزپارٹی کے علاوہ بقیہ دونوں پارٹیوں سے اتحاد کا تجربہ خوشگوار قطعاً نہیں رہا جبکہ پیپلزپارٹی سے اتحاد کا تجربہ مثالی تھا جس میں اتحاد کے تمام نکات پر نہ صرف مکمل عملدرآمد ہوا بلکہ زرداری صاحب نے جو کہا اس سے بھی بڑھ کر کیا۔

سینئر صحافی عارف نظامی کی قیادت میں سی پی این ای کی سٹینڈنگ کمیٹی کے وفد سے  گفتگو کرتے ہوئے سپیکر  پنجاب اسمبلی چوہدری  پرویز الٰہی نے کہا کہ وزیر اعظم کی جانب سے اتحادی امور پر قائم کردہ  پہلی  کمیٹی سے مذاکرات میں معاملات بہتری کی طرف گامزن ہونا شروع ہو گئے تھے، اب حکومت کی نئی کمیٹی سامنے آگئی ہے،ہمیں نئی حکومتی کمیٹی کی سمجھ نہیں آئی، ایک کمیٹی بنتی ہے دوسری ڈلتی ہے، ہم نے بھی بچت کمیٹی ڈالی ہے جو ابھی نہیں نکلی۔ انہوں نے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ سندھ کے آئی جی پولیس ڈاکٹر کلیم امام نے اچھا کردار ادا نہیں کیا،سندھ حکومت کےوزیر اعلیٰ کی حکم عدولی کی،وزیر اعلیٰ کے خلاف پریس کانفرنسیں کرنے میں مصروف رہا،ایسے افسر کے خلاف تو سخت انتظامی کارروائی ہونا چاہئے تھی لیکن جن لوگوں نے سندھ کے آئی جی کی سرپرستی کی انہوں نے اچھا نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ جس کے ساتھ چلتے ہیں نیک نیتی کے ساتھ چلتے ہیں، ہم چاہتے ہیں کہ حکومت چلے اور اپنی مدت پوری کرے،ہم فی الحال انتظار کرو اور بہتری کی امید رکھو کی پالیسی پر عمل کر رہے ہیں،ہمارا خیال ہے کہ اگر حکومت کو نقصان پہنچا تو ہمیں بھی نقصان پہنچے گا،تحریک انصاف نے ہم سے جو معاہدے کئے اس پر مکمل عملدرآمد نہیں کیا جا رہا، اس معاہدے میں مسلم لیگ ق کی اکثریت والے 4 اضلاع کے تمام امور ہماری صوابدید پر حوالے کرنا تھے لیکن اس کی وعدہ خلافی ہوئی۔

مزید : قومی