-170 ارب روپے کہاں چلے گئے؟

-170 ارب روپے کہاں چلے گئے؟

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پیش کی گئی دستاویزات کے مطابق بلوچستان کو دیئے گئے 170 ارب روپے غائب ہوگئے ہیں اور کسی کو علم نہیں کہ یہ رقم کہاں چلی گئی.... اگر یہ اطلاع درست ہے تو بہت ہی افسوسناک اور باعث شرم ہے۔ 170 ارب کی رقم کوئی معمولی رقم نہیں ہوتی لیکن اس کے بارے میں یوںاظہار بے بسی سے لگتا ہے کہ جن لوگوں نے یہ رقم غائب کی ہے، وہ اتنے بااثر ہیںکہ وفاقی حکومت بھی ان پر ہاتھ ڈالنے یاان کی نشاندہی کرنے کے لئے تیار نہیں۔ 170 ارب روپے کی یہ رقم جو غائب بتائی جاتی ہے، اگر پاور سیکٹر کے گردشی قرضوں کی مد میں آئی پی پیز کو ادا کردی جاتی تواس سے ملک کے اندھیرے بڑی حد تک کم ہوسکتے تھے۔ یہ رقم کل گردشی قرضوں کے نصف کے لگ بھگ ہے، لیکن ہماری بدقسمتی یہ ہے کہ بڑی بڑی رقوم کرپشن کی نذر تو ہورہی ہیں ، غریب عوام کے دکھ دور کرنے کے لئے کام نہیں آرہیں اور بظاہر یہ لگتا بھی نہیں ہے کہ اگر واقعی یہ رقم غائب ہوئی ہے تو اس کا کبھی کوئی سراغ بھی ملے گا، البتہ اس سے اتنا ضرور ثابت ہوتا ہے کہ کرپشن مافیا اربوں کی خوردبرد کرتے ہوئے کسی خوف اور ہچکچاہٹ کا شکار نہیںہوتا۔ بلوچستان کی صوبائی حکومت اور وفاقی حکومت کا فرض ہے کہ وہ اس ضمن میں تفصیلات سامنے لائے، ورنہ چہ میگوئیوں کا دائرہ پھیلے گا۔  ٭  

مزید : اداریہ


loading...