پرائیویٹ کالجوں کی طرح سرکاری کالجوں نے بھی پراسپیکٹس کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا

پرائیویٹ کالجوں کی طرح سرکاری کالجوں نے بھی پراسپیکٹس کی قیمتوں میں اضافہ کر ...

لاہو ر (اےجوکےشن رپورٹر) مےٹرک کے رزلٹ کے بعدشہر بھر کے سرکا ری اور نجی کا لجو ں مےں گےارہو ےں جماعت مےں داخلوں کا سلسلہ شروع ہو گےاہے اس مےں طلبہ و طالبات اور انکے والدےن نے پراسپکٹس خرےدنا شروع کردی ہےں مگر انہےں شکا ےت ہے کالجو میں پراسپکٹس کی قیمتیں آسمانوں سے باتیں کرنے لگی ہیں۔ گورنمنٹ کالجوں نے بھی پرائیویٹ کالجوں کے نقش قدم پر چلتے ہوئے مہنگے داموں پراسپکٹس فروخت کرنے کا سلسلہ شروع کردیا ہے جس کا براہ راست اثر غریب گھرانے کے طلباءو طالبات پر پڑ رہا ہے۔ گورنمنٹ کالجوں میں پراسپکٹس کی قیمت 200 روپے سے شروع ہوکر 550 اور 600 تک ہے جبکہ پرائیویٹ کالجوں میں انٹر کے پراسپکٹس کی قیمت 500 سے شروع ہوکر 2000 روپے تک ہے۔ اگرہر مضمون/ کیٹگری/ گروپ کے لیے علیحدہ علیحدہ پراسپکٹس خریدنے پڑیں تو یہ غریب والدین پر اضافی بوجھ ہے۔ گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور میں انٹرپارٹ ون کا پراسپکٹس خریدنے کےلئے آئے ہوئے طالب علم اسد نے بتایا کہ پراسپکٹس کی قیمتیں اتنی زیادہ ہیں کہ ہر کالج میں داخلہ فارم جمع نہیں کرواسکتے۔ میں نے خود صرف تین کالجوں میں داخلہ فارم جمع کروایا ہے۔ احسن نے بتایا کہ پہلے پراسپکٹس کی قیمتیں اتنی زیادہ نہیں ہوتی تھیں جتنی اس دفعہ ہوگئی ہیں۔ عثمان نے کہا ابھی داخلہ فیس بھی جمع کروانی ہے بہت زیادہ خرچ ہوجائے گا۔ جنید نے کہا کہ گورنمنٹ کالجوں میں میرٹ اتنا زیادہ ہے کہ مجبوراً پرائیویٹ کالجوں میں ہی داخلہ لینا پڑ رہا ہے۔ سلمان نے کہا پراسپکٹس اتنے مہنگے ہیں کہ تمام پیسے ان پر لگ گئے ہیں حالانکہ ابھی داخلہ فیس بھی جمع کروانی ہے۔ علی احمد نے کہا کہ پراسپیکٹس اتنے مہنگے ہیں پھر بھی لوگ خریدتے جارہے ہیں جبکہ بہت کم طلبہ کو داخلہ ملے گا۔ گورنمنٹ کالجوں والے پراسپکٹس کی مد میں بھی اچھی خاصی رقم بنارہے ہیں۔ مبین نے کہا کہ گورنمنٹ کالج میں پڑھنا بھی اب خواب بن گیا ہے۔ نور نے کہا میرٹ پر آنے والے طلبہ اور پوزیشن ہولڈرز کےلیے پراسپکٹس مفت ہونی چاہئیں۔ یاد رہے کہ اس دفعہ میٹرک کے امتحانات میں ایک لاکھ 35 ہزار سے زائد طلباءو طالبات کامیاب ہوئے ہیں جبکہ سرکاری کالجوں میں 27 ہزار ایک سو 35 کے قریب طلبا و طالبات داخلہ لے سکیں گے اور باقی ماندہ طلبہ پرائیویٹ کالجوں کے رحم و کرم پر ہونگے۔ غریب گھرانوں کے بچوں کے لیے مزید تعلیم حاصل کرنا ایک خواب بن کر رہ جائے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...