مساجد‘مزار‘امام بارگاہیں بھی بس ریپڈ منصوبے کی زد میں کربلا گامے شاہ کا بھی کچھ حصہ شامل

مساجد‘مزار‘امام بارگاہیں بھی بس ریپڈ منصوبے کی زد میں کربلا گامے شاہ کا بھی ...

لاہور(نمائندہ خصوصی) لاہور میں جاری رپیڈ بس ٹرانزٹ منصوبے کیلئے جہاں مزنگ چونگی سے لیکر مینار پاکستان تک سڑک کے دونوں ا طراف توڑ پھوڑ جاری ہے وہاں کئی مساجد ‘ مزار اور امام بارگاہیں بھی اس منصوبے کی زد میں آگئی ہیں جن میں سے سرفہرست لاہور کی 150 سالہ قدیمی امام بارگاہ کربلا گامے شاہ شامل ہے۔ منصوبے کی تکمیل کیلئے ایل ڈی اے نے کربلا گامے شاہ کی انتظامیہ کو نوٹس جاری کر دیئے۔ بتایا گیا ہے کہ کربلا گامے شاہ کا مرکزی گیٹ اس بس منصوبے کی زد میں آرہا ہے اور مجموعی طور پر کربلا گامے شاہ کے 50 فٹ احاطہ پر کٹ لگایا جائے گا۔ کربلا گامے شاہ کے ساتھ مین پر علی بابا پلازہ کا کچھ حصہ اور چند دکانیں بھی مسمار کی جائیں گی۔ اہل علاقہ کی مذہبی ‘ سیاسی‘ تاجر برادری نے اس منصوبے پر تحفظات کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ اس منصوبے سے لوگوں کے کاروبار ختم کیے جارہے ہیں۔ قیمتی جگہ کی حکومت اونے پونے پیسے دے رہی ہے۔ جگہ ملنے سے قبل رہائشیوں سے پوچھا بھی نہیں جارہا اور انہیں بذریعہ نوٹس طلب کرکے جگہ دینے کا کہا جارہا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...