بھارتی وزیر دفاع اے کے انتونی کو ٹنگڈار کا دورہ موسم کی خرابی کے باعث ملتوی

بھارتی وزیر دفاع اے کے انتونی کو ٹنگڈار کا دورہ موسم کی خرابی کے باعث ملتوی

سرینگر(آ ئی اےن پی ) بھارت کے وزیر دفاع اے کے انتونی کو ٹنگڈار کا دورہ موسم میں خرابی پیدا ہونے کی وجہ سے ترک کرنا پڑا تاہم انہوںنے بعد میںزچلڈارہ جاکر فوجی اہلکاروں سے تبادلہ خیال کیا۔ مےڈ ےا رپورٹس کے مطابق وادی کا دو روزہ دورہ ختم کرنے سے قبل وزیر دفاع کا پروگرام تھا کہ وہ ٹنگڈار سیکٹر میں اگلی چوکیوںکا دورہ کریں۔ ا±ن کے ساتھ فوجی سربراہ جنرل بکرم سنگھ، دفاعی سکریٹری، ششی کانت شرما اور شمالی کماند کے لیفٹنٹ جنرل پرنیک کے علاوہ15ویں کور کے کمانڈر آفیسر اور سینئر فوجی افسران تھے۔وہ اس وقت ٹنگڈار جارہے تھے جب ہیلی کاپٹر میں انہیں یہ پیغام دیا گیا کہ وہاںموسم کی خرابی کا معاملہ ہے اس لئے بعد میں انہوں نے ذچلڈارہ کا رخ کیا۔ فوجی افسران کا کہنا ہے کہ وزیر دفاع کو ذچلڈارہ نہیں جانا تھا۔ انہوں نے وہاں رانی پوسٹ پر فوجی جوانوں سے تبادلہ خیال کیا کیونکہ اسی جگہ مارچ اور اپریل میں دراندازی کی کوششوں کے دوران 10جنگجو مارے گئے تھے۔

وہاں وزیر دفاع کے اآنے کے بعد ہنگامی طور پر میٹنگ بلائی گئی۔ انتونی نے کچھ دیر وہاں فوجی اہلکاروں کے ساتھ گزارا اور انہوں نے ا±ن کی روز مرہ کی ضرورتوں اور دیگر معاملات پر تبادلہ خیال کیا۔ اس کے علاوہ لائن اف کنٹرول پر دراندازی کی کوششیں روکنے کے بارے میں بھی بات چیت ہوئی۔ وزیر دفاع کو بتایا گیا کہ ذچلڈارہ علاقہ گذشتہ برس دراندازی کے حوالے سے کافی سرگرم رہا۔ بعد میں وہ وہاں سے سیدھے دلی روانہ ہوئے تاہم ائرپورٹ پر انہیں وزیر مملکت برائے داخلہ اور آر ایس چب نے رخصت کیا۔ انہوںنے کہا کہ جموں وکشمیر میں بحالی امن میں فوج کا کلیدی رول رہا ہے اور جنگجویت کو ختم کرنے میں بھی فوج نے نمایاں کردار ادا کیا ہے۔ تاہم وزیر دفاع نے خبردار کیا کہ جنگجو گروپوں کو سرنو منظم اور متحرک کرنے کیلئے سرحد پار سے جنگجوﺅںکو جموںوکشمیر میں بھیجنے کی کوششوں میں تیزی ا?سکتی ہے اس لئے فوج کو لائن ا?ف کنٹرول پر انتہائی چوکسی کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔سانبہ میں حد متارکہ پر زیر تعمیر ٹنل کا انکشاف

مزید : عالمی منظر


loading...