چہتیوں کو نوازنے کمیشن کھانے کا چکر ایل ڈی اے ریسرچ اینڈ ایویلیوایشن ڈائریکٹوریٹ غیر اعلانیہ ختم

چہتیوں کو نوازنے کمیشن کھانے کا چکر ایل ڈی اے ریسرچ اینڈ ایویلیوایشن ...

لاہور(شہباز اکمل جندران) چہیتوں کو نوازنے اورکمیشن کھانے کے چکر میں ایل ڈی اے انتظامیہ نے غیر اعلانیہ طورپرریسرچ اینڈ ایویلیوایشن کا ڈائریکٹوریٹ ختم کردیا ہے، 37برسوں سے قائم شعبہ ریسر چ کی موجودگی کے باوجود ، ایل ڈی اے ٹاﺅن پلاننگ ، اربنائزیشن ، کمرشلائزیشن اور کلاسیفکیشن و ڈی کلاسیفکیشن کے علاوہ ماسٹر پلان کی تیار ی کے لیے دوسرے اداروں اور پرائیویٹ فرموں کی مرہون منت ہے،معلوم ہوا ہے کہ لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا قیام 1975میں عمل میں آیا ، اور اتھارٹی کے قیام کے ساتھ ہی ریسر چ اینڈ ایویلوایشن کا شعبہ قائم کیا گیا، تاکہ نہ صرف ایل ڈی اے کی سکیموں کو جدیدتقاضوں سے ہم آہنگ کیا جاسکے ،بلکہ دنیا بھر میں اربنائز یشن کی مثبت اور ماڈرن تبدیلیوں کو اپنانے کے علاوہ ٹاﺅن پلاننگ ، کمرشلائز یشن ، اربنائزیشن اور علاقوں کی کلاسیفکیشن و ڈی کلاسیفکیشن اور ماسٹر پلان تیار کیا جاسکے، لیکن وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ایل ڈی اے کی انتظامیہ نے ریسرچ اینڈ ایویلیوایشن کے شعبے کو نظر انداز کرنا شروع کردیا اور ماسٹرپلان و اربنائز یشن اور کلاسیفکیشن و ڈی کلاسیفکیشن کے تمام کام پی اینڈ ڈی کے شعبہ یونٹ اور پرائیویٹ فرموں کو سونپے جانے لگے،جس کی حالیہ مثال لاہو ر کے ریجبل ماسٹر پلان کی تیاری کے لیئے اربن یونٹ کی معاونت سے پرائیویٹ فرموں سے پیشکشیں طلب کی گئی ہیں،ذرائع کا کہنا ہے کہ اتھارٹی کی انتظامیہ محض چہیتی فرموں کو نوازنے اور کمیشن کھانے کے چکر میں ریسرچ اینڈ ایویلیوایشن کے شعبے کو نظر انداز کرتی ہے، معلوم ہوا ہے کہ مذکورہ ڈائریکٹوریٹ کے ڈائریکٹر کو کمرہ تک نہیں دیاگیا ، ایک عرصہ تک اس عہدے پر خاتون ڈائریکٹر فوزیہ روحی خان کو تعینات رکھا گیا پھرانہیں لمبی رخصت پر بھیج دیا گیا اوراس دوران ان کا کمرہ ڈائریکٹر میٹروپولیٹن کو الاٹ کردیا گیا، چھٹی کے بعد فوزیہ روحی خان واپس آئیں تو انہیں کوئی عہدہ نہ دیا گیا اور ان کے بار باراصرار کرنے پر انہیں دوبارہ اس عہدے پر تعینات کردیاگیا ہے، معلوم ہوا ہے کہ فوزیہ روحی خان کے ماتحت نہ تو کوئی ڈپٹی ڈائریکٹر ہے ، نہ ہی اسسٹنٹ ڈائریکٹر ہے،اور نہ ہی کلیریکل سٹاف ، ان کا کل سٹاف ایک نائب قاصد پر مشتمل ہے،وہ اپنے شعبے کی خود ہی افسر اور خود ہی ماتحت ہیں،اس سلسلے میں گفتگو کرتے ہوئے اتھارٹی کے چیف میٹروپولیٹن افسر وسیم احمد خان کا کہناتھا کہ یہ بات درست ہے کہ شعبہ ریسرچ اینڈ ایویلیوایشن غیر فعال بن چکا ہے، اور 37برس پرانے اس شعبے سے فائدہ نہیں اٹھایا جارہا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1