علی موسی گیلانی اور مخدوم شہاب الدین کی ضمانت قبل از گرفتاری میں ایک ہفتے کی توسیع

علی موسی گیلانی اور مخدوم شہاب الدین کی ضمانت قبل از گرفتاری میں ایک ہفتے کی ...

راولپنڈی (ثناءنیوز ) لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ نے ایفی ڈرین کوٹہ الاٹمنٹ کیس میں رکن قومی اسمبلی علی موسیٰ گیلانی اور وفاقی وزیر مخدوم شہاب الدین کی ضمانت قبل از گرفتاری میں ایک ہفتے کی توسیع کر تے ہوئے انہیں فوری طور پر اپنا بیان اے این ایف کے پاس ریکارڈ کرانے کا حکم دیا ہے۔ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس نجم الحسن اور شہزاد احمد گھیبا پر مشتمل دو رکنی ڈویژن بینچ نے ایفی ڈرین کوٹہ کیس میں علی موسیٰ گیلانی اور مخدوم شہاب الدین سمیت چار افراد کی عبوری ضمانتوں کی درخواست کی سماعت کی جس میں سابق ڈی جی ہیلتھ رشید خان جمعہ اور سابق ڈائریکٹر درناس کمپنی رضوان احمد نے اپنی ضمانت کی درخواستیں واپس لے لیں دونوں افراد کے وکلاءعدالت میں پیش ہوئے اور یہ ذاتی طور پر پیش نہیں ہوئے ۔ اے این ایف حکام نے عدالت کو بتایا کہ دونوں افراد کیس میں وعدہ معاف گواہ بن چکے ہیں ا س لیے ان کی گرفتاری کی ضرورت نہیں دوسری جانب مخدوم شہاب الدین اور علی موسیٰ گیلانی کے وکلاءخالد رانجھا اور شاہ خاور مصروفیات کے باعث عدالت میں پیش نہیں ہوئے جس بنا پر حفاظتی ضمانت میں ایک ہفتہ کی توسیع کر دی گئی عدالت نے علی موسیٰ گیلانی اور مخدوم شہاب الدین کو حکم دیا ہے کہ وہ آج شام چار بجے تک اے این ایف کے دفتر میں تفتیشی افسر کے روبرو پیش ہو کر بیانات قلمبند کروائیں اگر انہوں نے اے این ایف کے ساتھ تعاون نہ کیا تو ان کی عبوری ضمانت خارج کر دی جائے گی۔

مزید : صفحہ اول


loading...