اشیاءکے معیار کی تصدیق کی مقامی سطح پر بھی ضرورت ہے: میر چنگیز خان

اشیاءکے معیار کی تصدیق کی مقامی سطح پر بھی ضرورت ہے: میر چنگیز خان

کراچی (اکنامک رپورٹر) وفاقی وزیر برائے سائنس وٹیکنالوجی میر چنگیز خان جمالی نے کہا ہے کہ اشیاءکے معیار کی تصدیق نہ صرف ڈبلیو ٹی او اور دیگر عالمی اداروں کی ڈیمانڈ ہے بلکہ مقامی سطح پر بھی اس کی ضرورت کو شدت سے محسوس کیا جارہا ہے ۔ وہ پیر کو پاکستان اسٹینڈرڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی کے دفتر میں ادارے کے 42 ملازمین کو کنفرمیشن لیٹر دینے کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر ڈی جی پیر بخش جمالی اور دیگر بھی ان کے ہمراہ تھے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ پی ایس کیو سی اے سمیت تمام اداروں کو اپنے وسائل کو بروئے کار لاتے ہوئے مضبوط کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سیمنٹ، بسکٹ، چینی اور نوڈلز برآمد کرنے کےلئے سارک ممالک اور بھارت کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے جاچکے ہیں اور مذکورہ اشیاءکو برآمد کرنے سے قبل ان کے معیار کی تصدیق پی ایس کیو سی اے کی ذمہ داری ہوگی۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ لوگوں کو روزگار فراہم کرنا پیپلز پارٹی کی پالیسی کا حصہ ہے جس پر ترجیحی بنیادوں پر عمل درآمد کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ قومی اسمبلی کی کیبنٹ کمیٹی جس کے چیئرمین سید خورشید شاہ ہیں۔ لوگوں کو اداروں مٰں کنفرم کرنے کے حوالے سے کام کررہی ہے ۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پی ایس کیو سی اے اور پی سی ایس آئی آر ”حلال فوڈ“ کو فروغ دینے کےلئے کام کررہے ہیں۔جبکہ اس مقصد کے حصول کےلئے وزارت صنعت لاہور چیمبر سمیت دیگر اداروں سے بھی مشاورت کی جارہی ہے ۔ مشروبات اور منرل واٹر تیار کرنے والے اداروں کو احساس ہونا چاہئے کہ وہ اپنی مصنوعات کے معیار کی تصدیق کروائیں۔ اس میں ان کا فائدہ ہے کیونکہ اس طرح ان کا معیار بہتر ہوگا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ”پی ایس کیو سی اے“ اپنی لیبارٹریز کو اپ گریڈ کررہا ہے جبکہ ادارہ میں معیار کی تصدیق کےلئے پی سی ایس آئی آر کی لیبارٹریز کا استعمال بھی کرتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کو پی ایس کیو سی اے کی سرٹیفکیشن پر مکمل اعتماد ہے ۔ اس حوالے سے بات ہوچکی ہے ۔ قبل ازیں وفاقی وزیر نے پکے ہونے والے 42 ملازمین کو لیٹرز دیئے۔

مزید : کامرس