انتخابات کا بگل بجنے دیں‘بڑھکیں مارنے والوں کا نشہ اُتر جائے گا :شہباز شریف

انتخابات کا بگل بجنے دیں‘بڑھکیں مارنے والوں کا نشہ اُتر جائے گا :شہباز شریف

لاہور (پ ر) وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف نے کہا ہے کہ زرداری ٹولے نے قوم کو مہنگائی،غربت، بیروزگاری اور لوڈشیڈنگ کے کرب ناک عذاب میں مبتلا کررکھاہے۔ ماہ مقدس میں سحری ، افطاری اور تراویح کے دوران قوم کو اندھیرے دینے والے آئندہ حکمرانی کا خواب دیکھنا چھوڑ دیں ۔ عوام عام انتخابات میں نااہل حکمرانوں کی کرپشن اور لوٹ مار کی سیاست ہمیشہ کے لئے دفن کردیں گے۔ انہوںنے کہاکہ ملک کے تمام مسائل زرداری ٹولے کے پیداکردہ ہیں اگراس کرپٹ ٹولے سے نجات مل گئی تو ملک کے مسائل بھی ختم ہوجائیں گے۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر میاں محمدنواز شریف کی قیادت میں کرپشن سے پاک نیا پاکستان تعمیر کریں گے جہاں آئین و قانون اور انصاف کی حکمرانی ہوگی اور سب کو ترقی کے یکساں مواقع حاصل ہوں گے۔ وہ ضلع گجرات کے مسلم لیگی عہدیداران اور کارکنوں سے خطاب کر رہے تھے۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کہاکہ گذشتہ ساڑھے چار سالوں سے قوم کو اندھیروں میںرکھنے اور ان کی محنت کی کمائی سے اپنی جیبیں بھرنے والے بدعنوان حکمران حق حکمرانی کھو چکے ہیں، عوام ان کرپٹ کرداروں کا محاسبہ کریں گے اور آئندہ انتخابات میں ان لٹیروںکو مسترد کردیں گے۔ انہوںنے کہاکہ گذشتہ دور آمریت میں ترقیاتی منصوبوں کے نام پر لوٹ مار کرنے والے ایک بار پھر سینوں پر کرپشن کے تمغے سجائے لوٹ مار کے نئے ریکارڈ قائم کررہے ہیں۔ عوام ان چہروں کو اچھی طرح پہچان چکے ہیں اور اب وہ ان کے دھوکے میں نہیں آئیں گے۔ انہوںنے کہاکہ گجرات سمیت صوبے کے تمام اضلاع میں بڑے ترقیاتی منصوبے نہایت شفاف طریقے سے تیزی سے مکمل کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے ضلع گجرات کے لئے مختلف ترقیاتی سکیموں کی منظوری دیتے ہوئے گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول ٹانڈا کو ڈگری کالج بنانے ، جلال پور جٹاں میں کرکٹ گراﺅنڈ کی تعمیر اوردیگر علاقوں میں سڑکوں کی تعمیرو مرمت کی سکیموں کا اعلان کیا۔ مانیٹرنگ ڈیسک کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ انتخابات کا بگل بجنے دیں پھر بڑھکیں لگانے والوں کا نشہ ”ہرن“ ہو جائے گا ۔ ان کا کہناتھا کہ چیلنج کرنے والے اپنی حقیقت کا اندازہ گورنر راج کے دوران لگا چکے ہیں ، کرپشن کی تاریخ رقم کرنے والوں کا انجام قریب ہے جبکہ زرداری حکومت کے باعث ملک قرضوں کے بوجھ تلے ڈوب چکا ہے۔

مزید : صفحہ اول