چین اور بھارت کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہورہا ہے:پینٹاگون

چین اور بھارت کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہورہا ہے:پینٹاگون

واشنگٹن(اےن اےن آئی)امرےکی محکمہ دفاع پےنٹاگون نے کہاہے کہ ایشیا کی دو بڑی قوتیں چین اور بھارت ہمالیہ کے کو ہستانی علاقے میں ایک دوسرے کے مد مقابل کھڑی ہیںچین نے اپنی شاہراہوں کو بہت بہتر کر لیا ہے اور تبت کے باڈر کے ساتھ ساتھ نئے ہوائی اڈوں کی تعمیریا پرانے ائرپورٹس کی توسیع کر رہا ہے اور چین نے تبت کے سطح مرتفع میں جوہری صلاحیت کے حامل انٹر میڈیٹ میزائلز نصب کر دیے ہیں اور قریب تین لاکھ فوجی تعینات کر دیے ہیں۔ بھارت اپنے سرحدی علاقوں کو مضبوط تر بنانے کی منصوبہ بندی 10 سالوں سے کر رہا تھا۔ اس کے تحت نئی دہلی نے ریاست اروناچل پردیش میں رواں سال مئی کے ماہ سے انفنٹری یا پیدل فوج کی گشت میں واضح اضافہ کر دیا ہے ۔ اس علاقے میں پہلے ہی سے ایک لاکھ بیس ہزار فوجی تعینات تھے تاہم نئی دہلی نے اس میں 60 ہزار کا اضافہ کر دیا ہے ۔ اس کے علا وہ 30 لڑاکا اسکواڈرن بھی تعینات کردیے گئے ہیں اور بھارت براہموس کروز میزائل بھی تعینات کرے گا ایک عرصے سے دونوں ملکوں کے سرحدوں پر یہ غیر دوستانہ ماحول ایک بلین سے زائد کی آبادی والی جنوبی ایشیا کی دو دیو قامت ریاستوں کے لیے ایک امتحان سے کم نہیں۔

مزید : صفحہ آخر