بلوچستان بد امنی کیس ، بنیادی حقوق پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو گا : سپریم کورٹ

بلوچستان بد امنی کیس ، بنیادی حقوق پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو گا : سپریم کورٹ
بلوچستان بد امنی کیس ، بنیادی حقوق پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو گا : سپریم کورٹ

  

 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) سپریم کورٹ نے بلوچستان بد امنی کیس میں اپنے حکم نامہ میں کہا ہے کہ بنیادی حقوق پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو گا اور ٹارگٹ کلنگ میں ملوث افراد کے خلاف سختی سے نمٹا جائے۔کیس کی سماعت تین رکنی بنچ نے چیف جسٹس کی سربراہی میں کی جبکہ کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس کاکہنا تھا کہ بلوچستان میں آرٹیکل نو کی مکمل خلاف ورزی ہو رہی ہے تاہم وہاں آرٹیکل نو کا اطلاق ہو نا چاہیے۔ سماعت کے دوران ایجنسیوں کے وکیل راجہ ارشاد نے عدالت کو بتایا کہ بلوچستان میں ملک دشمن ایجنڈے کوفروغ دیا جا رہا ہے جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ ملک دشمنوںکے ایجنڈے کو آپ فروغ دے رہے ہیں ؟ چیف جسٹس نے راجہ ارشاد کو مخاطب کر کے کہا کہ ان کو احتیاط سے کام لینا چاہیے اور ایسے بیانات سے گریز کرنا چاہیے۔ اس موقع پر وفاق اور بلوچستان حکومت کی جانب سے رپورٹ عدالت میں پیش گئی لیکن آئی جی ایف سی کے دستخط نہ ہونے پر عدالت نے رپورٹ واپس کر دی ۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں