29 سالہ نکمے بیٹے سے تنگ والدین عدالت پہنچ گئے

29 سالہ نکمے بیٹے سے تنگ والدین عدالت پہنچ گئے
29 سالہ نکمے بیٹے سے تنگ والدین عدالت پہنچ گئے

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چین میں والدین اپنے 29 سالہ نکھٹو بیٹے کو گھر سے نکالنے کیلئے عدالت پہنچ گئے۔ زوکنگ نامی نوجوان کے والدین کا کہنا ہے کہ انہوں نے انتہائی محنت اور محبت سے بیٹے کی پرورش کی اور اچھی تعلیم دلوائی لیکن وہ ہر وقت گھر میں آرام کرتا رہتا ہے اور کھانے پینے کا خرچہ بھی خود نہیں اٹھا سکتا۔ زوکو جب ایک یونیورسٹی میں داخل کروایا گیا تو وہ یہ کہتے ہوئے گھر واپس آگیا کہ وہ ہاسٹل میں دوسرے لڑکوں کے ساتھ نہیں رسکتا۔ اسی طرح جب وہ تعلیم مکمل کرنے کے بعد ملازمت حاصل کرنے میں ناکام ہوا تو اس کے والد نے اسے ایک دوست کی فیکٹری میں ملازمت دلوائی لیکن یہ صرف تین ماہ میں ہی بوریت کا شکار ہوکر گھر واپس آگیا۔ زو کے والدین کا کہنا ہے کہ وہ ہر وقت سوتا ہے یا انٹرنیٹ سے لطف اندوز ہوتا ہے۔ ایک دن اچانک زو ایک نوجوان لڑکی کو گھر لے آیا اور والدین کو بتایا کہ اگرچہ اس کے پاس ملازمت نہیں ہے لیکن زندگی کا مزہ لینا تو اس کا حق ہے۔ اس پر بیچارے والدین کو عدالت سے درخواست کرنا پڑی کہ ان کے نالائق بیٹے کو گھر سے نکالا جائے کیونکہ وہ ان کے کہنے پر تو رخصت نہیں ہورہا۔ عدالت نے اسے دو ماہ کے اندر رخصت ہونے کا حکم دیا لیکن اس کے باوجود وہ والدین کے گھر پر ہی موجود رہا جس پر والدین نے اسے زبردستی نکالنے کی درخواست دے دی ہے۔

مزید :

تفریح -