’اگر طلاق سے بچنا ہو اور خوشگوار ازدواجی زندگی کی خواہش ہو تو شادی کیلئے بہتر عمر یہ ہے‘ جدید تحقیق میں سائنسدانوں نے سب سے مشکل سوال کا جواب دے دیا

’اگر طلاق سے بچنا ہو اور خوشگوار ازدواجی زندگی کی خواہش ہو تو شادی کیلئے ...
’اگر طلاق سے بچنا ہو اور خوشگوار ازدواجی زندگی کی خواہش ہو تو شادی کیلئے بہتر عمر یہ ہے‘ جدید تحقیق میں سائنسدانوں نے سب سے مشکل سوال کا جواب دے دیا

  


نیویارک(نیوزڈیسک) شادی کاسب سے بڑا خوف طلاق یا ناخوشگوار ازدواجی تعلقات ہوتے ہیں لیکن اب سائنسدانوں نے یہ مشکل بھی آسان کرتے ہوئے شادی کی بہترین عمر بتادی ہے۔

یونیورسٹی آف یوٹا کے ماہرسماجیات نک وولفنگر کا کہنا ہے کہ جو لوگ28اور32سال کے درمیان شادی کرتے ہیں ان میں طلاق کے امکانات بہت کم ہوتے ہیں۔وولفنگر نے 2006سے2010ءتک اور2011سے2013ءتک ڈیٹا کا جائزہ لیا ۔”جیسے آپ 20سال کے آخر اور30سال کے شروع میں ہوتے ہیں تو آپ کے طلاق کے امکانات کم ہوتے ہیں اور جیسے آپ32کی عمر سے بڑھنے لگتے ہیں اور40تک پہنچتے ہیں ویسے طلاق کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔“وولفنگر نے اپنی تحقیق میں لکھا ہے۔اس کا کہنا ہے کہ 32سال کے بعد ہر سال طلاق کے امکانات 5فیصد بڑھتے ہیں۔اس کا کہنا ہے کہ جو لوگ30سال تک شادی کا انتظار کرتے ہیں وہ ایسے لوگ ہوتے ہیں جو شادی کے لئے تیار نہیں ہوتے۔تاہم دیگر ماہر سماجیات نے وولفنگر سے اختلاف کیا ہے۔یونیورسٹی آف میری لینڈ کے فلپ کوہن کاکہنا ہے کہ ضروری نہیں کہ آپ کی عمر بڑھ رہی ہے تو آپ کے طلاق کے امکانات بھی بڑھ رہے ہیں۔اس کاکہنا ہے کہ اگر آپ طلاق نہیں چاہتے تو شادی کی بہترین عمر 45سے49سال کے درمیان ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...