نوجوان بھارتی کو سانپ کاٹ گیا، رشتہ دار مُردہ سمجھ کر جلانے گئے تو اُٹھ کر بیٹھ گیا لیکن پھر اس کے بعد کیا ہوا؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

نوجوان بھارتی کو سانپ کاٹ گیا، رشتہ دار مُردہ سمجھ کر جلانے گئے تو اُٹھ کر ...
نوجوان بھارتی کو سانپ کاٹ گیا، رشتہ دار مُردہ سمجھ کر جلانے گئے تو اُٹھ کر بیٹھ گیا لیکن پھر اس کے بعد کیا ہوا؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

  


نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں ایک نوجوان سانپ کے کاٹنے سے ’ہلاک‘ ہو گیا، لیکن جب اس کے اہلخانہ نے ہندو رسم کے مطابق اس کی لاش کو آگ لگائی تو وہ دوبارہ زندہ ہو گیاجس پر چتا کے پاس کھڑے لوگ حیران رہ گئے۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست مدھیاپردیش کے ایک گاﺅں کا 23سالہ نوجوان سندیپ لکڑیاں چننے کے لیے جنگل میں گیا جہاں اسے سانپ نے کاٹ لیا۔ لوگوں نے اسے تانترک (روایتی طریقوں، جادومنتر اورجڑی بوٹیوں سے سانپ کے کاٹے کا علاج کرنے والا شخص)کے پاس پہنچایا مگر وہ جانبر نہ ہو سکا اورتانترک نے اسے مردہ قرار دے دیا۔ ورثاءاسے واپس لے آئے اور آخری رسومات کی تیاری شروع کر دی۔

اس یورپی شہری کو ایک ایسی وجہ سے جیل میں ڈال دیا گیا کہ اگر پاکستان میں یہ کردیا جائے تو آدھے سے زیادہ انٹرنیٹ صارفین جیل پہنچادئیے جائیں

رپورٹ کے مطابق جب اس کی لاش کو لکڑیوں کے اوپر رکھ کر آگ لگا دی گئی تو سندیپ کے جسم نے حرکت کرنی شروع کر دی اور وہ کراہنے لگا جیسے اسے تکلیف ہو رہی ہو۔اس پر لوگوں کو معلوم ہوا کہ وہ زندہ ہے۔ جب وہ دوبارہ ہوش میں آ گیا تو لواحقین اسے ہسپتال لیجانے کی بجائے دوبارہ اسی تانترک کے پاس لے گئے۔ تانترک اس بار بھی اس کی جان بچانے میںناکام رہا اور اس بار وہ واقعی مر گیا۔ اس کے بعد اسے ہسپتال لیجایا گیا جہاں اس کا پوسٹ مارٹم کیا گیا۔ واضح رہے کہ بھارت کے دیہی علاقوں میں اب بھی لوگ سانپ کے کاٹے کا علاج ہسپتال کی بجائے قدیم روایتی طریقے سے تانترک سے کروانے کو ترجیح دیتے ہیں جس کے باعث اکثر مریض موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...