بچے کے پیدا ہونے کے ایک گھنٹے کے اندر اندر ماں کو یہ کام کردینا چاہیے، ماہرین نے والدین کیلئے انتہائی ضروری ہدایات جاری کردیں

بچے کے پیدا ہونے کے ایک گھنٹے کے اندر اندر ماں کو یہ کام کردینا چاہیے، ماہرین ...
بچے کے پیدا ہونے کے ایک گھنٹے کے اندر اندر ماں کو یہ کام کردینا چاہیے، ماہرین نے والدین کیلئے انتہائی ضروری ہدایات جاری کردیں

  


نیویار ک (نیوز ڈیسک) قدرت نے نومولود بچوں کی دنیا میں آمد کے ساتھ ہی ان کیلئے ماں کے دودھ کی صورت میں دنیا کی بہترین غذا ءاور شفاءکا اہتمام کر رکھا ہے مگر بدقسمتی سے بچوں کو اکثریت کو پیدائش کے فوری بعد ماں کا دودھ نہیں پلایا جاتا۔ اقوام متحدہ کے ادارے یونیسیف کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں جنم لینے والے بچوں میں سے تقریباًنصف کو پیدائش کے پہلے گھنٹے کے دوران ماں کا دودھ نہیں پلایا جاتا جو نومولود بچوں کی اموات کی بڑی وجہ ہے، لہٰذا والدین اس بات کو یقینی بنائیں کہ پہلے گھنٹے کے دوران ہی نومولود کو ماں کا دودھ ضرور پلا دیا جائے۔

حاملہ خاتون کے ہاں مردہ بچے کی پیدائش ، اس کے بعد 15 دن تک بچے کی لاش کے ساتھ کیا کرتی رہی؟ جان کر آپ اپنے آنسوﺅں پر قابو نہ رکھ پائیں گے

ویب سائٹ un.orgکے مطابق یونیسیف کا کہنا ہے کہ ماں کا دودھ بچوں کیلئے پہلی ویکسین ہے اور اسے بچے کی پیدائش کے پہلے گھنٹے کے دوران ہی پلایا جانا ضروری ہے۔ رپورٹ کے مطابق ہر سال جنم لینے والے تقریباً 8 کروڑ بچوں میں سے نصف کو پہلے گھنٹے کے دوران ماں کا دودھ نہیں پلایا جاتا۔

تحقیق کاروں نے یہ تشویشناک انکشاف بھی کیا ہے کہ بچے کو ماں کے دودھ کی فراہمی میں 2 سے 23 گھنٹے کی تاخیر ہوجانے کی وجہ سے 28 دن کے دوران ہی اس کی موت کا خدشہ 40 فیصد تک بڑھ جاتا ہے ، جبکہ 24 گھنٹے یا اس سے زائد تاخیر کی صورت میں بچے کی موت کا خطرہ 80 فیصد کی خوفناک حد تک بڑھ جاتا ہے۔ یونیسیف کی سینئر نیوٹریشن ایڈوائزر فرانس بیگن کی جانب سے جاری کی گئی پریس ریلیز میں کہا گیا کہ نومولود کیلئے ماں کا دودھ اتنا اہم ہے کہ آپ اسے زندگی اور موت کے درمیان فرق ڈالنے والی چیز کہہ سکتے ہیں۔ انہوں نے ماں کے دودھ کی حیرت انگیز افادیت بیان کرتے ہوئے بتایاکہ اگر ہر بچے کو پیدائش سے لے کر 6 ماہ کی عمر تک ماں کے دودھ کے سوا کوئی غذا نہ دی جائے تو ہر سال دنیا بھر میں 8 لاکھ سے زائد بچوں کی جان بچ سکتی ہے۔

ماں کا دودھ بچے کو صرف بہترین غذائت ہی فراہم نہیں کرتا بلکہ تمام بیماریوں سے بچاﺅ کی ویکسین کے طور پربھی کام کرتا ہے اور بچے کے جسم میں مدافعت پیدا کر کے اسے عمر بھر کیلئے بیماریوں سے لڑنے کی طاقت فراہم کر دیتا ہے۔ یونیسیف کی جانب سے یہ اہم رپورٹ اگست کے آغاز میں دنیا بھر میں ورلڈ بریسٹ فیڈنگ ویک کے انعقاد سے عین پہلے جاری کی گئی ہے تاکہ اس اہم ترین موضوع کے بارے میں زیادہ سے زیادہ آگاہی پیدا کی جاسکے ۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...