پراپرٹی کی قیمت کا تعین ایف بی آر کرے گی ،ود ہولڈنگ ٹیکس کے نفاذکی حد 30کی بجائے 40لاکھ مقرر کر دی گئی :اسحاق ڈار

پراپرٹی کی قیمت کا تعین ایف بی آر کرے گی ،ود ہولڈنگ ٹیکس کے نفاذکی حد 30کی ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)حکومت اور رئیل سٹیٹ کے نمائندگان کے درمیان مذاکرات کامیاب ہو گئے ،ود ہولڈنگ ٹیکس کی حد 30لاکھ کی بجائے 40لاکھ مقرر کر دی گئی جبکہ 2سال کا ہاکنگ پیریڈ پانچ سال تک بڑھا دیا گیاہے۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اسحاق ڈار کا کہناتھا کہ رئیل سٹیٹ کے ساتھ کئی روز سے مذاکرات جاری تھے جس دوران پراپرٹی ڈیلرز نے اپنے مسائل سامنے رکھے ، فائنل میٹنگ میں ہم نے اتفاق رائے سے کچھ فیصلے کیے ہیں ،ان فیصلوں کو قانونی شکل دینے کیلئے آرڈیننس پر غور کریں گے۔انہوں نے کہا کہ پراپرٹی کی قیمتوں کا تعین ایف بی آر کرے گا ،ود ہولڈنگ ٹیکس کی حد 30لاکھ کی بجائے 40لاکھ مقرر کر دی گئی ہے جبکہ 2سال کا ہاکنگ پیریڈ پانچ سال تک بڑھا دیا گیاہے۔پراپرٹی پانچ سال سے پہلے کی بجائے تین سال پہلے بیچنے پر ٹیکس لگے گا ،ایک سال میں بکنے والی پراپرٹی پر ٹیکس 10فیصد ہو گا ،دوسال میں دوبارہ پراپرٹی بیچنے پر 7.5فیصد ٹیکس لیا جائے گا جبکہ تین سال سے پہلے پراپرٹی بیچنے پر پانچ فیصد ٹیکس لیا جائے گا۔اسحاق ڈار کا کہناتھا کہ یکم جولائی 2016سے پہلے خریدی گئی پراپرٹی کو تین سال سے پہلے بیچنے پر پانچ فیصد ٹیک لگے گا۔ان کا کہناتھا کہ پراپرٹی کی قیمتوں پر کسی کو بلیک میل ہونے کی ضرورت نہیں ،اورسیز پاکستانی بھی ملک میں پراپرٹی میں سرمایہ کاری کرتے ہیں

مزید : صفحہ اول


loading...