سری نگر کے بیشتر علاقے کی آبادی کرفیو کے دوران بجلی اور پانی سے محروم

سری نگر کے بیشتر علاقے کی آبادی کرفیو کے دوران بجلی اور پانی سے محروم

سری نگر(کے پی آئی)شہر خاص کے بیشتر علاقے کی آبادی کرفیو کے دوران بجلی اور پانی سے محروم ہے جبکہ جگہ جگہ پر گندگی کے ڈھیر جمع ہوگئے ہیں۔شہر خاص کے رعناواری کے دولت ولی پورہ، کلوال محلہ، سعدہ کدل کے شاہ آباد ، ہاتھی خان ، راجوری کدل ، حول اور دیگر کئی علاقوں میں لوگ بجلی اور پانی سے محروم ہیں ۔ان علاقوں میں مسلسل کرفیو کی وجہ سے گندگی کے ڈھیربھی جمع ہوگئے ہیں۔مقامی لوگوں کے مطابق شہر خاص کے چند علاقوں کو حکام کی طرف سے جان بوجھ نظر انداز کیا جارہا ہے ۔

اور وہاں رہنے والے لوگ بنیادی سہولیات سے بھی محروم ہیں ۔ مقامی لوگوں نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ جہاں دولت ولی پورہ، کلوال محلہ، چھانہ محلہ اور ناید یارکو مسلسل نظر انداز کیا جا رہا ہے وہیں شہرخاص کے تجارتی مرکز جامع مسجد کے گردنواح میں آنے والے علاقوں کا حال بھی کچھ بہتر نہیں ہے۔ جامع مسجد کے گردنواح میں آنے والے گوجوارہ ، نوہٹہ، حول، زینہ کدل بھی بجلی اور پانی سے محروم ہے۔ گوجوارہ کے رہنے والے محمد سلطان شیخ نے کہا کہ انہوں نے کئی بارمتعلقہ محکموں کو اپنے مسائل سے آگاہ کیا بلکہ احتجاج بھی کیا لیکن ان کے کانوں پر جوں بھی نہیں رینگتی۔انہوں نے کہا کہ ایک طرف کرفیو ہے اور دوسری طرف گرمی کی شدت لیکن پینے کا پانی نایاب ہے۔انہوں نے مزید کہا کرفیو کی وجہ سے یہ صورتحال مزید ابتر ہوگئی ہے،پانی لانے کیلئے باہر جائیں تو کیسے اور بجلی کی شکایت کرنے باہر نکلیں تو وہ بھی ناممکن بلکہ خدشہ ہے کہ کہیں انسان ظلم وتشدد کا شکار نہ بن جائے ۔ حیدر پورہ ، راولپورہ، نوگام ، چھانہ پورہ اور باغِ مہتاب میں بھی پینے کا پانی نایاب ہونے کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔

مزید : عالمی منظر


loading...