الیکشن میں دھاندلی کے الزامات بے بنیاد ،سیاسی جماعتیں عمران خان سے دشمنی کریں مگر اداروں پر الزام نہ لگائیں ،تحریک انصاف نے میرے ووٹ پیسوں سے خریدے :عائشہ گلالئی

الیکشن میں دھاندلی کے الزامات بے بنیاد ،سیاسی جماعتیں عمران خان سے دشمنی ...
الیکشن میں دھاندلی کے الزامات بے بنیاد ،سیاسی جماعتیں عمران خان سے دشمنی کریں مگر اداروں پر الزام نہ لگائیں ،تحریک انصاف نے میرے ووٹ پیسوں سے خریدے :عائشہ گلالئی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان تحریک انصاف (گلالئی) کی چیئرپرسن عائشہ گلالئی نے کہا ہے کہعام انتخابات 2018ء کا ہونا پاکستان کی کامیابی ہے ،صاف شفاف الیکشن کروانے پر فوج اور الیکشن کمیشن  کو سلام پیش کرتی ہوں ،الیکشن میں دھاندلی کے الزامات بے بنیاد ہیں،سیاسی جماعتیں عمران خان سے دشمنی کریں مگر اداروں پر الزام نہ لگائیں، اس سے ملک کو نقصان ہوگا ،تحریک انصاف نے میرے ووٹ پیسوں سے خریدے ہیں،میں نے اپنی انتخابی مہم والد کے ریٹائرمنٹ کے پیسوں سے لڑی ،تحریک انصاف کی حکومت کا کاؤنٹ ڈاؤن شروع ہو گیا ،جمہوریت کے خلاف بہت سی سازشیں سامنے آئی ہیں لیکن ان کا پوری قوت سے مقابلہ کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف گلالئی کی سربراہ عائشہ گلالئی نے  اسلام آباد پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے جمہوری عمل کو بچانا ہے کیونکہ یہی ملک کے وسیع تر مفاد میں ہے،دھاندلی کے حوالے سے سیاسیجماعتوں کے الزامات بے بنیاد ہیں، انتخابات شفاف طریقے سے کرائے گئے اس لیے ہم چیف الیکشن کمشنر کے استعفیٰ کا مطالبہ مسترد کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ضمنی انتخابات میں بھی حصہ لیں گے اور پورے پاکستان میں اپنے دفاتر کھولیں گے، تحریک انصاف کی حکومت آ گئی ہے ،اب ایک سال کے اندر عوام سے کیے گئے وعدے پورے کریں، ایک سال کے بعد احتجاج کریں گے میں نے اپنی انتخابی مہم اپنے والد کی ریٹائرمنٹ کے پیسوں سے چلائی۔انتخابات شفاف ہوئے مگر تحریک انصاف نے پیسے چلائے جس سے مجھے شکست ہوئی میں نے دو لاکھ 90 ہزار روپے سے انتخابی مہم چلائی میرے بینک بیلنس میں اتنی ہی رقم تھی ٹوٹی تلوارسے الیکشن لڑا عوام چندہ دیں عمران خان نواز شریف کے چوری کیے گئے تین ہزار کروڑ روپے واپس ملک لے کر آئیں جو انہوں نے عوام سے وعدہ کیا تھا دیکھیں گے کہ عمران خان کی حکومت قرض لیتی ہے کہ نہیں عمران خان کو سعودی عرب سے تحائف بھی نہیں لینے ہونگے۔مجھے باہر سے بڑے فونز آئے اور لوگوں نے رابطے کرکے کہا کہ عمران خان حکومت میں آ گئے ہیں اور وہ سرکاری پیسے سے سب کچھ بنائے گا،اب ان کو چندے کی ضرورت نہیں اب ہم کروڑوں روپیہ میری پارٹی کے لئے فنڈز اکٹھے کریں گے ۔ملک کی مظلوم اور کمزور خواتین اپنے تحفظ کے لئے مجھے ایک امید سمجھتی ہیں ،میں اپنی ان خواتین کی امیدوں کو پورا کروں گی ۔میں ڈرنے والی نہیں ہوں ٹوٹی ہوئی تلواروں کے ساتھ لڑوں گی اور پیچھے نہیں ہٹوں گی ۔سیاسی جماعتیں انتشار کی طرف نہ جائیں ،تحریک انصاف کی حکومت کا کاؤنٹ ڈاؤن شروع ہو گیا ،پاکستانی خوب نظر رکھیں ،100 دنوں کا پلان انہوں نے دیا ہے،ایک کروڑ نوکریاں ،50 لاکھ گھر  کیسے اور کب دیتے ہیں؟۔

انہوں نے کہا کہ ’’نیا پاکستان ‘‘ اب بننے والا ہے ،اس میں پرانے پاکستان کے طریقے نہیں چلیں گے ،ہونا یہ چاہئے کہ تمام ٹھیکے شفاف طریقے سے دیئے جائیں ،کیا ٹھیکے اب بھی اپنے لوگوں کو دیتے ہیں یا شفاف طریقے سے دیتے ہیں ،قومی و صوبائی اسمبلی کے ذریعے ٹھیکے دیئے جائیں یہی شفافیت کا تقاضا ہے کہ سٹینڈنگ کمیٹیوں کے ذریعے تمام ٹھیکے دیئے جائیں ۔انہوں نے کہا کہ میرے بڑے بڑے جلسے ہوئے ،انہوں نے میرے خلاف سوشل میڈیا میں بڑی کمپئین چلائی باہر سے چلنے والے پیسے کی وجہ سے مجھے شکست ہوئی ،بہت بڑی ہمت کی بات تھی کہ میری پارٹی کو بنے ہوئے ابھی صرف 15 دن ہی ہوئے تھے کہ اس کے فورا بعد الیکشن میں چلے گئے اور پورے ملک سے اپنے امیدوار کھڑے کئے ۔عائشہ گلالئی کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی ،جماعت اسلامی اور ن لیگ کو خراج تحسین پیش کرتی ہوں کہ انہوں نے ایک جمہوری جماعت کے طور پر پارلیمنٹ کے اندر احتجاج کرنے کا فیصلہ کیا ،یہ ایک اچھی بات ہے جہاں تک عمران خان کے جیتنے کی بات ہے تو باہر باہر سے بڑا پیسہ چلا یا گیا ،جب آپ ایک حکومت میں ہو جاتے ہیں اور جب آپ بلین ٹری میں اتنا پیسہ کما لیتے ہیں ،بلین ٹری میں اتنا پیسہ کما لیتے ہیں ،جب آپ خیبر پختون خوا کے سارے معدنیات کے ٹھیکے جہانگیر ترین کو دے دیتے ہیں اور پانچ سال میں خوب کمائی کی ہوتی ہے تو پھر آپ یہ پیسہ الیکشن میں بھی استعمال کرتے ہیں ،میں نے اپنی انتخابی مہم والد کے ریٹائرمنٹ کے پیسوں سے لڑی اور اب بھی میرا  بینک بیلنس صرف 2 لاکھ 90 ہزار روپے ہے۔

مزید : قومی