کثیرالمنزلہ عمارتوں کی تعمیر سے زرعی اراضی محفوظ رہے گی

کثیرالمنزلہ عمارتوں کی تعمیر سے زرعی اراضی محفوظ رہے گی

لاہور (جنرل رپورٹر)بلڈرز، ڈویلپرز اور تعمیراتی شعبے سے وابستہ افراد نے کثیر المنزلہ رہائشی عمارتوں کی تعمیر کے اعلان کو خوش آئند قرار دیا ہے اور توقع ظاہر کی ہے کہ اس اقدام کے نتیجے میں قیمتی زرعی اراضی کے تحفظ کے ساتھ ساتھ شہریوں کو موزوں قیمت پر رہائشی سہولیات بھی میسر آسکیں گی۔ترقی یافتہ ملکوں میں لوگوں کی اولین ترجیح مکانات کی بجائے رہائشی اپارٹمنٹس ہیں جہاں زندگی کی بنیادی سہولتیں معیاری طریقے سے فراہم کی جاتی ہیں۔پاکستان میں شہریوں کی قوت خریدکم ہے‘ کثیرالمنزلہ فلیٹس کی تعمیر عام آدمی کو اپنی چھت مہیا کرنے کا بہترین ذریعہ ہے ایسوسی ایشن آف بلڈرز کے چیئرمین خضر ایوب اظہار‘صدر اکبر شیخ‘آرکیٹیکٹ خالد عبد الرحمن‘چیف میٹروپولیٹن پلانر سید ندیم اختر زیدی اورچیف ٹاؤن پلانر طارق محمودنے شرکائکو بریفنگ دی بلڈرز‘ ڈویلپرز اور تعمیراتی شعبے سے وابستہ ماہرین نے کثیر المنزلہ عمارتوں کی تعمیر کو وقت کی اہم ضرورت قرار دیتے ہوئے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے اور توقع ظاہر کی کہ بلند وبالا رہائشی عمارتوں کی تعمیر کو فروغ دینے کے نتیجے میں شہریوں کی رہائشی ضروریات کو پورا کیا جا سکے گا -

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...