چھ روز گزرگئے، محکمہ ریونیو کے شعبہ رجسٹریشن کی برانچیں نہ کھل سکیں 

    چھ روز گزرگئے، محکمہ ریونیو کے شعبہ رجسٹریشن کی برانچیں نہ کھل سکیں 

لاہور(اپنے نمائندے سے) صوبائی دارالحکومت کے محکمہ ریونیو کے شعبہ رجسٹریشن برانچیں چھ روز گزر جانے کے بعد بھی نہ کھل سکی لاہور کے 9ٹاؤنوں کی رجسٹریشن برانچوں میں کام ٹھپ ہو کر رہ گیا ایف بی آر کے نئے ٹیکسرز کو نافذ کرنے پر وکلا، پراپرٹی ڈیلرز اور رجسٹریشن برانچوں کے سٹاف کا تناز عہ شدت اختیار کر گیا، ڈپٹی کمشنر لاہور تنازعہ کو حل کروانے میں تاحال ناکام نظر آئی روزنامہ ”پاکستان“ کو ملنے والی معلومات کے مطابق کی جانب سے اس مسئلے کے حل کے لئے کوئی تجاویز سامنے نہیں آئی ہیں روزنامہ ”پاکستان“ سے بات کرتے ہوئے وکلاء کا کہنا تھا کہ رجسٹریشن برانچوں کے بند ہونے کی اصل وجہ ایف بی آر کی جانب سے لگائے جانے والے ڈبل ٹیکس ہیں عوام بہت پریشان ہو رہی ہے گورنمنٹ ریونیو جنریٹ کرنے کی کوشش کر رہی ہے اور بیورو کریسی ایسا ہونے نہیں دے رہی گورنمنٹ کو چاہئے اس کے حل کے لئے کوئی اقدام کرے۔ روزنامہ پاکستان سے بات کرتے ہوئے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل صفدر ورک نے کہا کہ صوبائی دارالحکومت میں ضلع لاہور کے 9ٹاؤنز جن میں داتا گنج بخش، اقبال ٹاؤن، سمن آباد ٹاؤن، نشتر ٹاؤن، واہگہ ٹاؤن، عزیز بھٹی ٹاؤن، راوی ٹاؤن، شالیمار ٹاؤن، گلبرگ ٹاؤن کی رجسٹریشن برانچیں 9روز سے مکمل طور پر بند ہیں جس کی وجہ سے عوام الناس کو بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور حکومتی خزانے میں ریونیو کو نقصان کا سامنا ہے رجسٹریوں کی وصولی اور دستاویزات کی تکمیل کا کام مکمل طور پر بند ہو چکا ہے لیکن ابھی تک افسران کہ رجسٹریشن برانچیں ہفتے کو بند کی گئی ڈسٹرکٹ بار کے ساتھ ہماری میٹنگ بھی ہوئے ہے وہ لوگ جا رہے ہیں کہ ایف بی آر کا جو لاء بنایا ہے اس کے مطابق انٹرپوسٹیں وہ اپنے طریقے سے کر رہے ہیں اس مسئلے کے حل کے لئے ہم نے ایف بی آر کو ریفرنس بھیجا ہے آئی ٹی او ٹو لاہور کو کہ اس کیس میں ہمیں گائیڈ کیا جائے اور ایک دوروز میں اس مسئلے کو حل کر لیا جائے گا۔

 رجسٹریشن برانچیں 

مزید : صفحہ آخر


loading...