صادق آباد‘ دریائے سندھ کی ”انگڑائی“ سپر بند ٹوٹنے کا خدشہ‘ انتظامیہ کی دوڑیں 

صادق آباد‘ دریائے سندھ کی ”انگڑائی“ سپر بند ٹوٹنے کا خدشہ‘ انتظامیہ کی ...

صادق آباد‘جمالدین والی(تحصیل رپورٹر‘ نمائندہ خصوصی)دریائے سندھ کے مقام پر بنگلہ دلکشا کے نواحی علاقہ بستی مجھانی کے مقام پر سپربند میں پانی کی سطح میں اضافے اور تیز بہا کی وجہ سے میں ن سپر بند کا تین سو فٹ دریا برد ہوگیا ہے دریا کے پانی کا لیول زمین سے دو فٹ نیچے ہے دریائے سندھ (بقیہ نمبر42صفحہ7پر)

کے پانی میں اضافے کی صورت میں جمالدین والی،بنگلہ اچھا،سونمیانی سمیت متعدد علاقہ جات زیر آب آنے کا خدشہ ہے جبکہ بستی جام مجھانی. سوناخان زمکانی،جام رمضان جھلن،بستی محمد بخش جھلن،بستی جام بھارہ سمیت متعدد علاقہ جات دریا برد ہونے کا شدید خطر ہے اس موقع پر موجود ایس ای غلام مرتضی بلوچ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سپر بند کو بستی مجھانی کے قریب کٹا سے بچانے کیلئے محکمہ ایری گیشن کا عملہ کام کر رہا ہے نئے سپر بند پر کام شروع کر دیا گیا ہے تاکہ دیگر وسیع علاقے کو سیلاب سے بچایا جا سکے اس موقع پر مقامی افراد نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ان کی بستیاں سیلاب کی صورت میں زیر آب آجائیں گی نئے سپر بند جو بنایا جارہا ہے ان کی بستیوں کے اوپر حفاظتی بند باندھنے کے باعث ان کے گھر اور ان کی فصلیں دریا برد ہو جائیں گی جبکہ حفاظتی بند بنانے کے باعث انہیں نقل مکانی کرنی پڑے گی جس کا حکومت کی جانب سے کوئی خاطر خواہ انتظام نہیں کیا گیا اور ناہی انہیں کسی قسم کا معاوضے اور متبادل جگہ فراہم کی جا رہی ہے انہوں نے حکام بالا سے اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ہے آخری اطلاعات آنے تک ممکنہ سیلاب کے خطرے کے پیش نظر بستی مجھانی اور دیگر بستیوں کے لوگوں نے وہاں سے نقل مکانی شروع کردی ہے‘ جبکہ  دریائے سندھ میں پانی کی مقدار میں مسلسل اضافہ بنگلہ دلکشاء کے قریب سپر بند کے پشتے کمزور بند ٹوٹنے کا خدشہ ہے۔ملک بھر میں شدید بارشوں کے پیش نظر دریائے سندھ میں پانی کی مقدار میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے تو دوسری جانب بنگلہ دلکشاء بستی مانجھانی کے قریب قائم سپر بند کے پشتے کمزور ہو چکے ہیں۔ دریاکا پانی سپر بند کیساتھ ٹکرانے کے باعث بند کمزور ہو رہا ہے جس سے مذکورہ بند ٹونے کا خدشہ ہے بند ٹونے کے باعث سینکڑوں قریبی آبادیوں کو نقصان پہنچے گا بستی مانجھانی کے مکینوں محمد بخش، نور الہی، صدیق موہانہ، محمد افضل، اللہ وسایا، خدا بخش، طالب حسین، جمشید علی، و دیگر نے احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ اس اہم مسئلہ کے بارے میں متعدد بار حکام بالا کو آگاہ کر چکے ہیں مگر کوئی شنوائی نہیں ہوئی ہے ہمیں شدید خطرہ لاحق ہے حکومت پنجاب فوری طور پر بند کی مضبوطی کیلئے اقدامات کرے دوسری طرف ایکسن ایری گیشن کے مطابق بند کو مضبوط بنانے کیلئے کام شروع کر دیا گیا ہے۔ بند پر پتھر ڈالے جا رہے ہیں تاکہ بند کو مضبوط کیا جا سکے۔ 

سپر بند

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...