ملتان ڈویژن‘ 71 ترقیاتی منصوبوں پر 98 ارب روپے خرچ کرنیکا فیصلہ

ملتان ڈویژن‘ 71 ترقیاتی منصوبوں پر 98 ارب روپے خرچ کرنیکا فیصلہ

ملتان (سٹی رپورٹر)ملتان ڈویڑن کے نئے71 ترقیاتی منصوبوں پر پنجاب حکومت 97ارب 87کروڑ 59لاکھ روپے خرچ کرے گی۔جاری 405ترقیاتی منصوبوں کو ایک کھرب 80کروڑ روپے سے مکمل کیا جائے گا،اب تک جاری ترقیاتی منصوبوں پر 76ارب 3کروڑ 51لاکھ روپے خرچ (بقیہ نمبر29صفحہ12پر)

ہوچکے ہیں۔کمشنر آفس میں ڈویڑنل ڈویلپمنٹ کمیٹی کے اجلاس میں ڈویڑن کے چاروں اضلاع ملتان،وہاڑی،خانیوال اور لودھراں کے ترقیاتی منصوبوں کا جائزہ لیاگیا،کمشنر ملتان ڈویڑن افتخار علی سہو نے اجلاس کی صدارت کی۔اجلاس میں ڈپٹی کمشنر ملتان عامر خٹک،ڈپٹی کمشنر وہاڑی عرفان علی کاٹھیا،ڈپٹی کمشنر خانیوال اشفاق احمد، ڈپٹی کمشنر لودہراں ،ڈائریکٹر ڈویلپمنٹ وقاص احمد خان اور تمام متعلقہ اداروں کے سربراہان نے شرکت کی۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کمشنر ملتان افتخار علی سہو نے کہاکہ پنجاب حکومت ماضی میں نظر انداز کئے جا نے کے تاثر حامل علاقوں میں ترقی پر خصوصی توجہ دے رہی ہے۔جنوبی پنجاب کے اہم اضلاع ملتان،وہاڑی،خانیوال اور لودہراں میں عوامی فلاح کے منصوبوں جن میں تعلیم،صحت،کھیل،ذرائع مواصلات،زراعت،لائیو سٹاک جیسے اہم محکموں کے منصوبے شامل ہیں کو ترجیح دی جارہی ہے تاکہ عوام کا معیار زندگی بہتر بنایا جاسکے۔انہوں نے کہاکہ حکومت پنجاب کی طرف سے ان منصوبوں کے لئے مالی مشکلات کے باوجود فراہم کردہ فنڈز کے بر وقت اور درست استعمال پر افسران توجہ دیں،منصوبوں پر کام کی رفتار اور تعمیراتی کام اور سامان کے معیار کی جانچ پڑتال کے لئے ڈپٹی کمشنر ز اور متعلقہ اداروں کے سربراہان وقتاََفوقتاََ ان منصوبوں کا معائنہ کریں تاکہ تعمیراتی نقائص کی بر وقت نشاندہی سے انہیں دور کرنے میں مدد ملے۔انہوں نے کہا کہ کنٹریکٹرز کو ان منصوبوں سے معقول منافع حاصل ہوتا ہے۔اس لئے منصوبوں پر کام کے معیار پر کوئی سمجھوتا نہ کیا جائے،اجلاس کو ڈائریکٹر ڈویلپمنٹ وقاص احمد خان نے بتایا کہ ڈویڑن بھر کے جاری ترقیاتی 405منصوبوں کو ایک کھرب 80ارب 50کروڑ 80لاکھ روپے سے مکمل کیا جائے گا،اب تک ان منصوبوں پر 76ارب 35کروڑ51لاکھ روپے خرچ ہوچکے ہیں رواں مالی سال میں ان منصوبوں کے لیے 76کروڑ62لاکھ روپے فراہم کر دیے گئے ہیں۔ان منصوبوں میں ضلع ملتان کے 179،خانیوال کے 92،وہاڑی کے 10اور لودہراں کے 25تعلیم،صحت،کھیل،و امور نوجوانان،فراہمی و نکاسی آب،سماجی بہبود،لوکل گورنمنٹ و کمیونٹی ڈویلپمنٹ،سڑکوں،انہار،توانائی،سرکاری دفاترکی تعمیر،شہری ترقی،زراعت،جنگلات،لائیو سٹاک،خوراک،ٹرانسپورٹ،ایمرجنسی سروسز،انفارمیشن ٹیکنالوجی،آثار قدیمہ،اوقاف،مذہبی امور کے منصوبے شامل ہیں۔ رواں مالی سال کے دوران97ارب 87کروڑ59لاکھ روپے مالیت کے71 نئے منصوبے ملتان ڈویڑن میں شروع کیے جارہے ہیں جن میں 46ملتان ضلع کے 11خانیوال 4وہاڑی اور10 لودہراں ضلع میں شروع ہوں گے ان میں سے 8منصوبوں کی منطوری ہوچکی ہے 63 منصوبے منظوری کے مراحل میں ہیں۔رواں مالی سال کے منصوبوں میں اعلیٰ تعلیم کے 3سپیشل ایجوکیشن کے 2کھیل کے 4صحت6فراہمی و نکاسی آب کے 6لوکل گورنمنٹ کمیونٹی ڈویلپمنٹ کے10،سڑکوں کے10انہار کے 3پبلک بلڈنگ کے 5،شہری ترقی کے 14،زراعت،خوراک،لائیو سٹاک،آثار قدیمہ اور منصوبہ بندی و ترقی کے اداروں کا ایک ایک جبکہ مذہبی امورو اوقاف کے 4منصوبے شامل ہیں۔ان منصوبوں میں نشتر ٹو، ملتان سے وہاڑی اور وہاڑی سے دیپالپور تک دو رویہ سڑک،پنجاب پبلک سروس کمیشن کے علاقائی دفاتراور مینجمنٹ اینڈ پروفیشنل ڈویلپمنٹ کمپلیکس شامل ہیں۔کمشنر ملتان ڈویڑن افتخار علی سہونے ہدایت کی کہ ان منصوبوں کی منظوری جلد کرائی جائے اور تمام منصوبوں کو مقررہ مدت میں مکمل کرنے کے لئے ہر ممکن اقدامات بروئے کار لائے جائیں۔

کمشنر ملتان

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...