نشتر ہسپتال‘ ایم ایس ڈاکٹر عاشق ملک کی معطلی کا حکم بحال

  نشتر ہسپتال‘ ایم ایس ڈاکٹر عاشق ملک کی معطلی کا حکم بحال

ملتان (وقا ئع نگار‘خبرنگار خصوصی) سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن پنجاب مومن آغا نے نشتر ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر عاشق ملک کی معطلی کے احکامات کو بحال کر دیا ہے۔ ڈاکٹر عاشق حسین ملک کو فوری محکمہ اسپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر رپورٹ کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔اس سلسلے میں جاری نوٹیفیکشن میں کہا گیا ہے کہ ڈاکٹر عاشق ملک کے خلاف محکمانہ انکوائری جاری ہے۔انہیں کرپشن کے (بقیہ نمبر30صفحہ12پر)

الزامات پر 12 مئی 2019 کو معطل کیا گیا تھا۔مگر انہوں نے اس فیصلے کیخلاف عدالت سے رجوع کیا تھا۔عدالت نے انہیں بحال کرنے کا حکم دیا تھا۔ایم ایس ڈاکٹر عاشق حسین ملک کیخلاف پیڈا ایکٹ 2006 کے تحت انکوائری بھی جاری ہے۔نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ انصاف کے تقاضے پورے کرنے کے لئے انکی معطلی کے احکامات بحال کئے جاتے ہیں۔تاکہ وہ ایم ایس کی حیثیت سے انکوائری پر اثر انداز نہ ہوں۔ہائیکورٹ ملتان بینچ نے نشتر ہسپتال ادویات خریداری کرپشن کیس میں ایم ایس نشتر ہسپتال سمیت پانچ ملزمان کی عبوری ضمانت میں توسیع کرتے ہوئے سماعت 20 اگست تک ملتوی کرنے کا حکم دیا ہے۔اس موقع پر ملزمان کے وکلاء نے عدالت کو بتایا کہ انہوں نے ڈائریکٹر جنرل اینٹی کرپشن کو دوبارہ انکوائری کرانے کی درخواست دے رکھی ہے اس لیے انکوائری مکمل ہونے تک ضمانتوں میں توسیع دی جائے۔ فاضل عدالت میں ایم ایس نشتر ہسپتال ڈاکٹر عاشق ملک، ڈاکٹر صدیق،عارف، امتیاز، اور آمنہ عارف نے درخواست ضمانت قبل از گرفتاری دائر کی تھیں کہ ان کے خلاف تھانہ اینٹی کرپشن ملتان میں نشتر ہسپتال میں ادویات کی خریداری میں کرپشن کرنے سمیت دیگر دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا جس پر انہوں نے اینٹی کرپشن عدالت سے رجوع کیا تو ان کی ضمانتیں خارج کرنے کا حکم دیا گیا،جبکہ وہ بے قصور ہے اور ان کے خلاف کوئی شواہد موجود نہیں ہے اس لیے ان کی ضمانتیں منظور کرتے ہوئے اینٹی کرپشن کو انہیں گرفتار نہ کرنے کا حکم دیا جائے۔ قبل ازیں فاضل عدالت نے ملزمان کی ایک ایک لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکوں پر عبوری ضمانتیں منظور کر لی تھیں۔ ملزمان کی جانب سے ایڈووکیٹ چوہدری شاکر اور حاجی اسلم ملک عدالت میں پیش ہوئے۔دریں اثناء ہائیکورٹ ملتان بینچ نے ایم ایس نشتر ہسپتال کے تبادلے کے خلاف درخواست پر سیکرٹری ہیلتھ سے ایک ہفتہ میں جواب طلب کر لیا ہے۔ فاضل عدالت میں ایم ایس نشتر ہسپتال ڈاکٹر عاشق ملک نے درخواست دائر کی تھی کہ وہ درست طریقے سے اپنے عہدے پر فرائض سرانجام دے رہا تھا تاہم اس کو تبدیل کر کے لاہور رپورٹ کرنے کی ہدایت کی گئی جس پر عدالت سے بھی رجوع کیا تاہم اس کو دوبارہ تعینات کر دیا گیا تاہم اب معاملہ فاضل عدالت میں زیر سماعت ہونے کے باوجود محکمہ صحت کی جانب سے خفیہ طور پر ایم ایس نشتر ہسپتال تعیناتی کے لئے 25 جولائی کو انٹرویو کر لئے گئے ہیں جو کہ غیر قانونی اقدام ہے۔

ڈاکٹر عاشق

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...