لڑکی قتل‘ حادثات میں بچے‘ خاتون سمیت 4 افراد جاں بحق‘ 1 خودکشی

  لڑکی قتل‘ حادثات میں بچے‘ خاتون سمیت 4 افراد جاں بحق‘ 1 خودکشی

ملتان‘ مظفر گڑھ‘ ماہڑہ شہر‘ ڈیرہ‘ ڈاہرانوالہ‘ رحیمیار خان (وقائع نگار‘ نمائندگان پاکستان) لڑکی قتل‘ حادثات میں بچے‘ خاتون سمیت 4 افراد جاں بحق‘ 1خودکشی۔ ملتان سے وقائع نگار کے مطابق گھریلو حالات سے دلبرداشتہ نوجوان نے خود کو گولی مار کر خودکشی کی کوشش کر ڈالی۔کرنٹ لگنے سے 35 سالہ خاتون جابحق جبکہ ٹریفک کے مختلف حادثات میں 13 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ریسکیو ذرائع کے مطابق تھانہ مظفر آباد کے علاقے القریش فیز ٹو کے رہائشی ستائیس سالہ الطاف نے گزشتہ روز گھریلو حالات سے(بقیہ نمبر40صفحہ12پر)

دلبرداشتہ ہوکر خود کو گولی سے زخمی کرلیا۔حالت خراب ہونے پر نشتر ہسپتال داخل کروادیا گیا ہے۔ہیڈ محمد والا کے رہائشی زبیدہ کو گھر میں بجلی سے کرنٹ لگا۔اور وہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگئی جبکہ ٹریفک کے مختلف حادثات میں طارق۔سلمان۔محمد سمیع۔حامد۔عثمان۔اسلم۔کامران۔اشرف۔رشید۔جعفر۔شوکت۔زاہد۔فرحان اور حسین زخمی ہوئے ہیں۔جن کو ریسکیو نے ابتدائی طبی سہولیات دینے بعد نشتر ہسپتال منتقل کردیا ہے۔جہاں انکی حالت فی الحال حطرے سے باہر بتائی جارہی ہے۔ مظفر گڑھ‘ ماہڑہ شہر سے بیورو رپورٹ‘ سپیشل رپورٹر‘ نمائندہ پاکستان کے مطابق مظفرگڑھ جھنگ روڈ،ہیڈ محمد والا کے قریب دو موٹر سائیکلوں کے درمیان خوفناک تصادم دو افراد جام انصر اور ستار موقع پر جاں بحق جبکہ دو فراد شدید زخمی۔تفصیل کے مطابق دونوں موٹر سائیکل مخالف سمت میں جاتے ہوئے ایک دوسرے سے ٹکرائے جس کی وجہ سے دونوں موٹر سائیکلوں کے ڈرائیور موقع پر ہی جاں بحق ہوئے۔ ریسکیو ذرائع کے مطابق حادثہ تیز رفتاری کے سبب اور اوور ٹیک کرتے ہوئے پیش آیا۔ ریسکیو 1122 مظفرگڑھ کی دو ایمبولینسز کا جائے حادثہ پر بروقت رسپانس فوری ریسکیو آپریشن جاری کرتے ہوئے دونوں زخمیوں کو موقع پر ہی ابتدائی طبی امداد فراہم کرنے کے بعد نشتر ہسپتال ملتان منتقل کر دیا گیا۔جاں بحق ہونے والے دونوں افراد کو ایمبولینس کے ذریعے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال مظفرگڑھ منتقل کر دیا گیا جبکہ جاں بحق ہونے والے ایک شخص ستار کا تعلق روہیلانوالی اور دوسرا جام انصر کا تعلق راجن پور سے ہے۔ڈیرہ غازیخان سے سٹی رپورٹر‘ نمائندہ خصوصی کے مطابق سمینہ کینال میں چھ سالہ بچہ عمر ڈوب کر جاں بحق، ریسکیو اہلکاروں نے نعش نکال کر ورثاء کے حوالے کر دی، ریسکیو ذرائع کے مطابق سمینہ کا رہائشی چھ سالہ عمر والد اللہ بچایا سمینہ نہر کے کنارے پر کھیل رہا تھا کہ اچانک پاؤں پھسلنے سے نہر میں گر کر تیز پانی کی لہروں کی نظر ہوگیا ریسکیو کے غوطہ خوروں نے اطلاع ملنے پر موقع پر پہنچ کر کئی گھنٹوں کی جستجو کے بعد بچے کو مردہ حالت میں تلاش کرکے ورثاء کے حوالے کر دیا ہے۔ڈاہرانوالہ سے نامہ نگار کے مطابق قتل یا حادثاتی موت، ڈاہرانوالہ میں سات سالہ بچی کی تشدد زدہ نعش برآمد، ایمان فاطمہ قرآن پاک کاسپارہ پڑھنے گئی اور لاپتہ ہو گئی، آج ہرن مائنر سے نعش برآمد ہوئی، بچی سے جنسی زیادتی کا بھی شبہ ہے، علاقہ بھر میں سراسیمگی پھیل گئی، والدین پر سکتہ تاری، تفصیلات کے مطابق ڈاہرانوالہ کے نواحی گاؤں چک نمبر 205 مراداضافی بستی کے غریب محنت کش محمد ندیم کی سات سالہ بیٹی ایمان فاطمہ دو روز قبل صبح کے وقت گھر سے قرآن پاک کا سپارہ پڑھنے گئی اور واپس نہ آئی، جس کی گمشدگی کی ایف آئی آر تھانہ ڈاہرانوالہ میں درج کروائی گئی تھی کہ آج صبح ہائی سکول چک نمبر 207 مراد کے قریب نہر مراد سے نکلنے والے ہرن مائنر سے ایمان فاطمہ کی تشدد زدہ لاش برآمد ہوئی ہے، واقعہ کی اطلاع جنگل میں آگ کی طرح پھیل گئی اور پورے علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا جبکہ ننھی ایمان فاطمہ کے والدین پر سکتہ تاری ہو گیا، ڈی پی او بہاولنگر سمیت کرائم سین اور پولیس کی ٹیمیں موقع پر پہنچ گئیں اور بچی کو پوسٹ مارٹم کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے، یاد رہے کہ بچی سے زیادتی کا بھی شبہ ظاہر کیا جا رہا ہے، تاہم میڈیکل و پوسٹ مارٹم رپورٹس آنے کے بعد صحیح صورت حال واضح ہوگی۔رحیمیار خان سے بیورو رپورٹ کے مطابق ٹریفک حادثہ میں شدید زخمی ہونے والی50سالہ خاتون ہسپتال میں دم توڑگئی۔25 زیرعلاج۔تفصیل کے مطابق رکن پور کی رہائشی50سالہ وزیراں بی بی کو سڑ ک کراس کرنے کے دوران تیز رفتار مسافر وین نے بے قابو ہوکر ٹکر ماردی جس کے نتیجہ میں وہ شدید زخمی ہوگئی۔ ورثاء نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود وزیراں بی بی جانبرنہ ہوپائی اوردم توڑگئی، جبکہ مختلف حادثات میں شدید زخمی ہونے والے25افراد جن میں ڈہرکی کی رہائشی45سالہ امینہ بی بی، سٹیلائیٹ ٹاؤن کی35سالہ فاطمہ مائی، چک111پی کا 22 سالہ امام بخش، چک72کا45سالہ محمداقبال، اوباڑو کا40سالہ محمد رفیق، صادق آبادکا60سالہ نذیراحمد، ڈہرکی کا40سالہ شاہ محمد، چک115پی کا45سالہ محمد سلیم، ٹبی لاڑاں کا25سالہ محمد عمران، میرے شاہ کا35سالہ رفیق احمد اور بستی غریب شاہ کارہائشی20سالہ محمد شفیق وغیرہ کو ہسپتال میں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔اولاد کی نافرمانی سے دلبرداشتہ ہوکر معمرشخص نے گندم میں رکھنے والی زہریلی گولیاں کھاکر خودکشی کرلی،3افراد کااقدام خودکشی۔ تفصیل کے مطابق ریلوے کالونی کارہائشی70سالہ محمدفاروق نے اولاد کی نافرمانی سے دلبرداشتہ ہوکر گندم میں رکنھے والی زہریلی گولیاں کھالی، حالت غیر ہونے پرورثاء نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود محمدفاروق جانبرنہ ہوپایااور دم توڑ گیا جبکہ اقدام خودکشی کرنے والے3افراد جن میں چک194کی رہائشی22سالہ فرزانہ بی بی، جمالدین والی کا20سالہ محمد یوسف اورصادق آبادکارہائشی25سالہ محمد ندیم کو ہسپتال میں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...