ٹیکسی ڈرائیور اور محنت کش کی ایمان داری نے پاکستانیوں کا سر فخر سے بلند کر دیا

ٹیکسی ڈرائیور اور محنت کش کی ایمان داری نے پاکستانیوں کا سر فخر سے بلند کر دیا
ٹیکسی ڈرائیور اور محنت کش کی ایمان داری نے پاکستانیوں کا سر فخر سے بلند کر دیا

  


دبئی (طاہر منیر طاہر) دبئی میں پاکستانی ڈرائیور اور محنت کش نے دیانت داری کی مثال قائم کرتے ہوئے مسافر کو اس کے گم شدہ ہزاروں ڈالر اور محنت کش نے 15کلو سونا پولیس کے حوالہ کردیا۔ پولیس اور روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے ڈرائیور کو انعام سے نوازا۔ قونصلیٹ آف پاکستان دبئی نے بھی شفاقت علی اور طاہر خان کے اعزاز میں پروقار تقریب کا اہتمام کیا۔ جس کے مہمان خصوصی قونصل جنرل احمد امجد علی تھے۔

اس موقع پر قونصلر احمد شامی‘ وہاب شیخ‘ عاشق شیخ اور صولت ثاقب بھی موجود تھی۔ آغاز کرتے ہوئے احمد امجد علی نے کہا۔ یہ ہمارے ہم وطنوں طاہر علی اور شفاقت علی نے بہادری اور دیانت کی مثال قائم کی ہے ہمیں ان نوجوانوں پر فخر ہے۔ ہماری کمیونٹی کو بھی فخر ہے۔ یہ ہمارے ہیروز ہیں۔ آپ دونوں نے جو دیانت داری سے رقم اور سونا دبئی حکام کو واپس کیا۔ اس سے پاکستان اور فیملی کا نام روشن کیا۔ ہم آپ سب کو اعزازات سے نوازیں گے۔ بلکہ ہم اپنے قومی دنوں 23مارچ اور 14اگست کو پوزیشن ہولڈر طالب علموں‘ کلچرل‘ اسپورٹس‘ ایجوکیشن اور دیگر شعبہ میں نمایاں ہائے کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والوں بھی اعزازات سے نوازیں گے۔

اس موقع پر زلیخا ہسپتال انتظامیہ نے پاکستانیوں کو فری ٹریننگ ایمرجنسی کی صورت میں دینے کا اعلان کیا۔ یہ ٹریننگ سوشل سنٹر شارجہ‘دبئی‘ راس الخیمہ اور پاکستانی اسکولوں اور قونصلیٹ میں ہسپتال کا سٹاف بالکل فری دے گا جس میں یہ بتایا جائے گا کہ ایمرجنسی کی صورت میں کس طرح مریض کی مدد کرتا ہے۔ اس ٹریننگ کے لئے ہم لیبر کیمپوں میں بھی جائیں گے۔ 25سالہ شفاقت خان جس کا تعلق خانیوال سے ہے۔ اس نے کہا کہ مجھے بڑی خوشی ہو رہی ہے کہ پاکستان قونصلیٹ کی جانب سے ڈنمارک کی ایک فیملی نے میری ٹیکسی میں سفر کیا۔ اس دوران فیملی 21ہزار ڈالر موبائل اور پاسپورٹ گاڑی میں بھول گئے میں نے راشدیہ پولیس اسٹیشن پہنچ کر نقدی اور سارا سامان جمع کروا دیا ڈائریکٹر راشدیہ پولیس اسٹیشن بریگیڈئر سعید حماد بن سلیمان المالک نے اپنے دفتر میں ایک سادہ تقریب میں نہ صرف سرٹیفکیٹ بلکہ4ہزار درہم بھی مجھے بطور ستائش پیش کئے۔ روڈ اتھارٹی نے بھی 3ہزار درہم سے نوازا۔ مجھے بڑی خوشی ہو رہی ہے کہ میرے دل میں لالچ نہیں آیا۔ میں گزشتہ ایک سال سے دبئی میں ٹیکسی چلا رہا ہوں میری تعلیم میٹرک ہے۔ طاہر علی نے بتایا کہ بس سٹاپ پر صفائی کا کام کر رہا تھا کہ مجھے ایک بیگ ملا۔ میں نے اپنی کمپنی انچارج کو فون کرکے بتایا۔ کہ صفائی کے دوران مجھے ایک بیگ ملا ہے۔

کمپنی کے افسر نے کہا کہ اسے لا کر دفتر جمع کروا دو۔ میں نے کہا بہت وزنی ہے۔ جب حکام نے بیگ کھولا تو اس کے اندر 15کلو سونا تھا۔ مجھے آج خوشی ہو رہی ہے۔ کہ ایمان داری سے سونا واپس کر دیا۔ میرے گھر والے خصوصاً والد صاحب بہت خوش ہیں کہ ایمان داری سے سونا واپس کیا۔ مجھے خوشی ہے کہ پاکستان اور پاکستانیوں کا نام روشن کیا ہے میرا تعلق نارووال سیالکوٹ سے ہے اور 27سالہ طاہر علی نے قونصل جنرل کا بھی شکریہ ادا کیا کہ احمد امجد علی نے دیانت داری پر سرٹیفکیٹ اور اعزاز سے نوازا۔ آخر میں قونصل جنرل احمد امجد علی نے قونصلیٹ کے دیگر افسران کے ہمراہ دونوں ہیروز کو سرٹیفکیٹ اور شیلڈز سے نوازا۔

مزید : عرب دنیا


loading...