پشاور کے ہوٹل میں ویٹر کی نوکری کر نے والے شخص کے دو بیٹوں نے ایسا شاندار کارنامہ سر انجام دے دیا کہ ہر پاکستانی بیٹے کے لیے مثال بن گئے

پشاور کے ہوٹل میں ویٹر کی نوکری کر نے والے شخص کے دو بیٹوں نے ایسا شاندار ...
پشاور کے ہوٹل میں ویٹر کی نوکری کر نے والے شخص کے دو بیٹوں نے ایسا شاندار کارنامہ سر انجام دے دیا کہ ہر پاکستانی بیٹے کے لیے مثال بن گئے

  


پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) والدین کا اولاد کے بہترمستقبل کے لیے اپنا پیٹ کاٹنا کوئی نئی بات نہیں ہے تاہم پشاور کے اس غریب شخص نے اس کی ایک نئی مثال قائم کر دی ہے جو ہوٹل پر ایک ویٹر کی نوکری کرکے اپنے دو بیٹوں کو ڈاکٹربنا رہاہے۔ ویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق اس عظیم انسان کا نام منان ہے جو پشاور کے مشہور ’خیبر چرسی تکہ شاپ‘ نامی ریسٹورنٹ پر ویٹر کی نوکری کرتا ہے اور اس کے دو بیٹے پاکستان کے بہترین میڈیکل کالجز میں زیرتعلیم ہیں۔

ایک بیٹا ایوب میڈیکل کالج ایبٹ آباد اور دوسرا کبیر میڈیکل کالج پشاور میں پڑھ رہا ہے۔ منان خیبرپختونخوا کے شہر چارسدہ کا رہائشی ہے۔ وہ فائیوسٹار ہوٹل پرل کانٹی نینٹل میں بھی کام کر چکا ہے اور امریکی سفارتخانے میں بھی۔ منان کا کہنا ہے کہمیں تب تک ملازمت کرتا رہوں گا جب تک میرے بیٹوں کی تعلیم مکمل نہیں ہو جاتی۔ میرا ایک ہی خواب ہے کہ میں اپنے بیٹوں کو زندگی میں کامیاب دیکھوں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور


loading...