تاریخی شاہی باغ کی اہمیت ختم نہیں ہونی چاہئے، پشاور ہائیکورٹ

تاریخی شاہی باغ کی اہمیت ختم نہیں ہونی چاہئے، پشاور ہائیکورٹ

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاور ہائیکورٹ نے قراردیا ہے کہ تاریخی شاہی باغ پارک کی تاریخی اہمیت ختم نہیں ہونی چاہیئے، شاہی باغ کی بہتری کے لئے کام کریں، لیکن تاریخی اہمیت کو ختم نہ کیا جائے عدالت نے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ اور چیف کنزرویٹر کو وزیر باغ کا دورہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے شہر کے تمام پارکوں سے متعلق رپورٹ ایک ماہ میں جمع کرانے کی ہدایت کیس کی سماعت پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس قیصررشید اور جسٹس ناصرمحفوظ پر مشتمل بینچ نے کی کیس کی سماعت شروع ہوئی تو چیف کنزرویٹر شاہی باغ پارک، سیکرٹری لوکل گورنمنٹ اور اے اے جی سید سکندر حیات شاہ عدالت میں پیش ہوئے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نے شاہی باغ سے متعلق رپورٹ عدالت میں پیش کی جسٹس قیصر رشید نے کہا کہ شاہی باغ کی تاریخی اہمیت ختم نہیں ہونی چاہیئے، بہتری کے لئے کام کریں، لیکن تاریخی اہمیت کو ختم نہ کیا جائے پشاور سے چنار کے درخت ختم ہورہے ہیں پارک میں چنار کے درخت بھی لگائیں سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نے عدالت کو بتایا کہ پارک کے فوارے، واکنگ ٹریک اور لائٹ خراب ہے اس کو ٹھیک کررہے ہیں اور جلد ہی شاہی باغ کی خوبصورتی کو بحال کر دیا جائے گا عدالت نے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ اور چیف کنزرویٹر کو وزیر باغ کا دورہ کرنے کا حکم دیا اور انہیں شہر کے تمام پارکوں سے متعلق رپورٹ ایک ماہ میں جمع کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے کیس کی سماعت 16 ستمبر تک کیلئے ملتوی کردی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -