2019ء محفوظ سال جبکہ 2020پاکستان سیاحتی مقام قرار دیا گیا: ذوالفقار بخاری

2019ء محفوظ سال جبکہ 2020پاکستان سیاحتی مقام قرار دیا گیا: ذوالفقار بخاری

  

پشاور(سٹی رپورٹر)وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانیز اینڈوزیرمملکت برائے ہیومن ریسورس ڈویلپمنٹ ذوالفقار بخاری نے کہاہے کہ گزشتہ دہائی میں سال2019پاکستان کاسب سے محفوظ برس تھا 2020 کیلئے پاکستان کو بہترین سیاحتی مقام قرار دیا گیا تھا جو سیکیورٹی کے معاملے میں ایک بڑی کامیابی ہے اس سے استفادہ کیلئے پاکستان کو سیاحت کیلئے ایک برانڈ کی ضرورت ہے اگلے دو سالوں میں پاکستان دو بڑے بین الاقوامی سیاحت کے پروگراموں کی بھی میزبانی کرنے جا رہا ہے خیبرپختونخوا کو سیاحت کے شعبے میں آنے والے ایسے مواقع پرگرفت پانے کیلئے سرمایہ کاری بورڈ کا سب سے بڑا کردار ہے۔ان خیالات کااظہارانہوں نے خیبرپختونخوا میں سیاحت کے شعبے میں مواقع پر آن لائن بات چیت کے دوران کیا سیشن کااہتمام خیبرپختونخوابورڈآف انوسمنٹ اینڈٹریڈ کے سی ای او حسن دادبٹ نے کیاتھا سیشن کے دیگر مقررین میں عابد مجید سکریٹری، کھیل، ثقافت اور سیاحت، جنید خان منیجنگ ڈائریکٹر ٹورازم کارپوریشن خیبر پختونخوا، نجی شعبے کی ماہرکرن افضل، ورلڈ بینک گروپ مسٹر کوہ کنگ کی، صدر نیو سنٹر ایشیاء،ملیشیا ڈاکٹر فرح عارف شامل تھے۔ حسن داو د نے سیشن کا آغاز سیاحت کے شعبے میں حکومت کی ترجیحات اور اقدامات کے بارے میں ایک مختصر جائزہ پیش کر تے بتایا کہ حکومت سیاحوں کیتوجہ حاصل کرنے اور ان کی سہولت کیلئے پالیسیوں پر کام کر رہی ہے۔ انہوں نے ڈونرز خصوصا ورلڈ بینک گروپ کی شراکت کا بھی اعتراف کیا جو صوبائی حکومت کو سیاحت کو فروغ دینے اور سیاحت دوست صوبہ بنانے کے لئے معاونت کررہے ہیں۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سکریٹری سیاحت عابد مجید نے وفاقی حکومت اور خصوصاوزیرمملکت زلفی بخاری کے تعاون کو سراہااور کہا کہ حکومت سیاحت کے فروغ کیلئے کوشاں ہے مہمانوں کی سہولت کیلئے اچھے معیار کی رہائش والے نئے ریسٹ ہاو سز پر افتتاحی کام جاری ہے مختلف مقامات پر سیاحت کے سہولت مراکز قائم کیے جارہے ہیں۔ حکومت ایس پیز کے بعد مہمان نوازی کے شعبے اور ٹور آپریٹرز کے لئے بھی تربیت حاصل کر رہی ہے۔ جنید خان نے بتایا کہ سیاحت شعبہ کی ترقی صوبائی حکومت کی اولین ترجیح ہے سیاحت کو فروغ دینے کے لئے قدرتی خوبصورتی تک رسائی کیلئے بہتر انفراسٹرکچر ضروری ہے جس پرحکومت کام کر رہی ہے۔کرن افضل نے سیاحت کے رجحانات کے بارے میں پریزنٹیشن دی اورکہا کہ وبائی صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے سیکٹرز کو دوبارہ مرحلہ وار کھولنااوریگولیٹ کرناچاہئے اہم جزجس میں سرمایہ کاری بورڈاہم کرداراداکرسکتاہے وہ سیاحت کے شعبے میں سرمایہ کاری کیلئے پبلک پرائیویٹ پارٹرشپ ہے سی ای او سرمایہ کاری بورڈحسن داو د نے اپنے اختتامی کلمات میں کہا کہ سیشن بہت نتیجہ خیز اور فائدہ مند تھا اوربورڈ مستقبل میں بھی اس طرح کے سیشنز کاانعقاد کرے گا۔ انہوں نے تمام مقررین کا شکریہ ادا کیا اور ان سے درخواست کی کہ وہ سرماریہ کاری بورڈکے سفیربن کرصوبہ کو انوسٹمنٹ کی ترجیحی منزل بنانے کیلئے اپناکرداراداکریں 

مزید :

صفحہ اول -