آزاد کشمیر انتخابات میں دھاندلی کے الزامات ، وزیر مملکت فرخ حبیب نے بلاول بھٹو زرداری کو مفت مشورہ دے دیا 

آزاد کشمیر انتخابات میں دھاندلی کے الزامات ، وزیر مملکت فرخ حبیب نے بلاول ...
آزاد کشمیر انتخابات میں دھاندلی کے الزامات ، وزیر مملکت فرخ حبیب نے بلاول بھٹو زرداری کو مفت مشورہ دے دیا 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر مملکت اطلاعات و نشریات فرخ حبیب نے کہا ہے کہ بلاول صاحب، اگر آپ کے پاس دھاندلی کے کوئی ثبوت ہیں تو وہ پیش کر کے الیکشن کمیشن یا دیگر متعلقہ فورمز پر رجوع کریں، ایسے ہوا میں شور اور واویلا کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہونے والا، یہاں پر انتخابات میں پیسوں کے استعمال کی سیاست زرداری اور نواز شریف نے متعارف کرائی،یہ ہر الیکشن سے قبل جتنے پیسے لگاتے ہیں اقتدار ملنے کے بعد اس سے کئی زیادہ پیسے بنا لیتے ہیں، اس دفعہ گھاٹے کا سودا ہوا،پاکستان کے اندر اگر کسی نے کرپشن،منی لانڈرنگ اور جعلی اکاؤنٹس میں ریکارڈ قائم کیا ہے تو وہ آپ کے ابو آصف زرداری ہی ہیں۔

 بلاول بھٹو  زرداری کی پریس کانفرنس  پر اپنے ردعمل میں وزیر مملکت فرخ حبیب نے کہا کہ عمران خان نے اپوزیشن میں ہوتے ہوئے پانچ حلقے کھلوانے کے لئے کئی سال کی جدوجہد کی، ن لیگ اور پیپلز پارٹی عمران خان کی دھاندلی کے خلاف جدوجہد سے سبق سکھیں،دھاندلی کو صرف الزامات کی حد تک استعمال نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ آزاد وجموں کشمیر میں شکست کے بعد بلاول زرداری حواس باختہ نظر آتے ہیں،انہیں اب 2023ء تک کوئی الیکشن مہم نظر نہیں آرہی، آزاد کشمیر میں انتخابات کے دوران جن لوگوں نے قانون کو ہاتھ میں لیا ان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی، قانون اپنا راستہ بنا لے گا، جن کے پاس آزادوجموں کشمیر کے 45حلقوں کے لئے امیدوار ہی نہیں تھے انہیں بات کرنے کا کوئی حق نہیں پہنچتا۔

انہوں نےکہاکہ ماضی میں پیپلزپارٹی اورن لیگ نےبھی آزادوجموں کشمیر میں حکومتیں بنائیں،کیا وہ حکومتیں بھی پیسےکےزورپر بنائی گئیں تھیں؟جیسےہمیں کہا جارہا ہے،عجیب منطق ہےاپنی 11جیتی ہوئی سیٹوں پرجشن منارہےہیں اورجہاں پی ٹی آئی جیتی وہاں دھاندلی کےالزامات لگارہے ہیں،بلاول صاحب،آپ فکر نہ کریں،آپ کاہمیشہ کےلئےن لیگ کےساتھ ہی دوسری اور تیسری پوزیشن کےلئےمقابلہ رہےگا۔

وزیر مملکت فرخ حبیب نے کہا کہ پاکستان کے تینوں صوبوں کے بعد گلگت بلتستان اور آزادوجموں کشمیرکے عوام نے ووٹ کے ذریعے پیغام دے دیا ہے کہ" نومور پیپلز پارٹی " ، پیپلز پارٹی کو مشورہ ہے کہ وہ قانون اور آئین کے دائرے میں رہ کر اپوزیشن کرنے کے لئے سوچنا اور سمجھنا شروع کر دے،بلاول صاحب، کل تو آپ اپوزیشن کو اکٹھا کرنے کی بات کررہے تھے اور آج ن لیگ کے ساتھ 5سال مقابلے کی باتیں کر رہے ہیں۔

مزید :

قومی -