پنجاب حکومت عوامی منصوبوں کو سیاسی انتقام کا نشانہ نہ بنائے، بلال مصطفی شیرازی

پنجاب حکومت عوامی منصوبوں کو سیاسی انتقام کا نشانہ نہ بنائے، بلال مصطفی ...

لاہور(جنرل رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ یوتھ ونگ کے مرکزی سیکرٹری جنرل سید بلال مصطفی شیرازی نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت عوامی منصوبوں کو سیاسی انتقام کا نشانہ نہ بنائے ، چوہدری پرویز الہٰی دور کے وزیرآباد کارڈیالوجی ہسپتال کو نامکمل رکھنے کا نوٹس لینے پر سپریم کورٹ کے شکر گزار ہیں ۔انہوںنے کہا کہ وزیر آباد کارڈیالوجی ہسپتال کو مسلسل 6 سال سے نامکمل رکھے جانے پر سپریم کورٹ کے معزز ججز کی طرف سے نوٹس لیے جانے پر اہلیان گوجرانوالہ، وزیر آبا د ، گجرات انتہائی خوش ہیں کہ اس نوٹس کے بعد یقینا ہسپتال کو فنکشنل کرنے کے لیے مطلوبہ فنڈز کی دستیابی ممکن ہوسکے گی اور علاقہ کے لاکھوں عوام کو امراض قلب کے حوالے سے گھر کی دہلیز کے قریب ترین علاج معالجہ کی سستی اور بروقت سہولیات میسر آسکیں گی ، چودھری پرویز الہٰی نے 2006 ءمیں وزیر آباد کارڈیالوجی ہسپتال کا سنگ بنیاد رکھا تھا ، عمارت وقت مقررہ پر تعمیر ہوگئی تھی مگر حکومت کی تبدیلی کے بعد جو کام جہاں تھا وہیں ٹھپ ہو گیا ، ہماری مقتدر سیاست کا یہ انتہائی تاریک پہلو ہے کہ حکومت بدلنے کے بعد مفاد عامہ کے منصوبہ جات کو بھی ٹارگٹ کیا جاتا ہے کہ مخالفت سیاسی حریف کے بارے میں عوام کی زبانوں پر کلمہ خیر نہ آنے پائے ، اس مذموم خواہش کی تکمیل میں چاہے عوام اور خزانے کا کتنا ہی نقصان کیوں نہ ہوجائے ،سید بلال شیرازی نے کہا کہ وزیر آباد کارڈیالوجی ہسپتال نے 2009 ءمیں 2 ارب کی لاگت سے مکمل ہونا تھا ،90 فیصد کام چودھری پرویزالہٰی کے دور حکومت میں مکمل ہو گیا تھا ، بقیہ 10 فیصد کام 6 سال سے ٹھپ ہے ، جس کی لاگت میں بھی ایک سو سے ڈیڑھ سو فیصد اضافہ ہو گیا ہے تاخیر کے باعث عوام نے جو تکلیف اٹھائی وہ اس کے علاوہ ہے ، وزیر اعلیٰ پنجاب کو نامکمل منصوبوںکے باعث خزانے پر پڑنے والے اضافی اربوں روپے کے بوجھ کے ذمہ داروں کا تعین بھی کرنا چاہئیے ، وزیر آباد کارڈیالوجی ہسپتال ان میں سے ایک منصوبہ ہے ، چودھری پرویزا لہٰی کی ایک سوچ تھی کہ بڑے شہروں کی طرف آبادی کی نقل مکانی روکی جائے اور عوام کو گھرکے قریب ترین صحت ، علاج روزگار فراہم کیا جائے ، اس ضمن میں انہوںنے انڈسٹریل زون بنائے یہ زون صرف لاہور کی حد تک نہیں تھے بلکہ صوبہ کے ہر ڈویژ ن پر بنائے گئے لاہور کے جدید کارڈیالوجی ہسپتال کی طرز پر ملتان میں بھی کارڈیالوجی ہسپتال تعمیر کیا گیا ،بہاولپور ، فیصل آباد میں بھی جدید کارڈیک یونٹ قائم کیے گئے جس سے سالانہ ہزاروں مریض شفاپا رہے ہیں ، اسی طرح کالجز اور یونیورسٹیوں کا صوبہ بھر میں جال پھیلایا گیا ، درجنوں کالجز بھی عمارت مکمل ہونے کے کے باوجود تا حال فنکشنل نہیںہوسکے ، افسوس چودھری پرویز الہٰی کے دور کے منصوبے عمارت مکمل ہونے کے باوجود بندپڑے ہیں ،سپریم کورٹ نے وزیر آباد کارڈیالوجی ہسپتال کا نوٹس لیا ہے ،جس سے اس منصوبہ کے جلد یا بدیر مکمل ہونے کی امید پیدا ہو گئی ہے تعمیر منصوبوں کے حوالے سے حکومت ضد چھوڑ کر از خود انہیں مکمل کردے ، یہ منصوبے کسی ایک کے فرد کے نہیں صوبہ کے کروڑوں عوام کی فلاح وبہبودکے لیے بنائے گئے تھے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...