پاک ایران گیس منصوبے کا معاملہ کھٹائی میں پڑ گیا ’’دفن‘‘ کرنیکی تیاریاں مکمل

پاک ایران گیس منصوبے کا معاملہ کھٹائی میں پڑ گیا ’’دفن‘‘ کرنیکی تیاریاں ...

 اسلام آباد( آن لائن ) پاک ایران گیس منصوبہ کا معاملہ نہ صرف کھٹائی میں پڑ گیا بلکہ اسے مکمل طور پر ’’دفن‘‘ کرنے کی تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں کیونکہ حکومت سعودی عرب کو ناراض نہیں کرنا چاہتی اس کی بجائے ایل این جی کے منصوبے پر حکومت نے توجہ مرکوز کرلی ہے ، رواں سال نومبر میں درآمد شروع ہو جائے گی ۔ ذرائع نے آن لائن کو بتایا کہ ایران پر اقتصادی پابندیوں کی وجہ سے پاک ایران گیس منصوبہ پر حکومت پیش رفت نہیں ہورہی ۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ پیپلز پارٹی کی تین بار ایل این جی درآمد کرنے کی کوشش کی لیکن سپریم کورٹ نے بدعنوانی کی وجہ سے یہ کام رکوا دیا ۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ ایل این جی کی درآمد کیلئے ٹینڈر کیا گیا ہے جو رواں سال نومبر اس ٹرمینل کے ذریعے ایل این جی درآمد کی جائے گی ۔ وفاقی وزیر پٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاک ایران گیس پائپ لائن منصوبے پر 2009ء میں دستخط ہوئے تھے سابق حکومت نے اس پر کوئی پیش رفت نہیں کی جب تک ایران کیخلاف پابندیاں ختم نہیں ہوتیں منصوبہ پر کام آگے نہیں بڑھ سکتا ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...