وکلاء آئے روز ہڑتالوں سے گریز کریں

وکلاء آئے روز ہڑتالوں سے گریز کریں

مکرمی! وکلاء حضرات سے ہمدردانہ التماس ہے کہ وہ وسیع تر عوامی مفاد کی خاطر آئے روز کی ہڑتال سے اجتناب کرتے ہوئے اپنے موکلین پر رحم کھائیں۔ وکلاء کا پیشہ ایسا ذمہ دارانہ پیشہ ہے، جس سے ہزاروں افراد کی غمی اور خوشی وابستہ ہوتی ہے جو کہ مختلف مقدمات میں ملوث ہوتے ہیں اور بحیثیت حوالاتی زیر سماعت مقدمات کے تحت جیل میں پابندِ سلاسل ہو کر ایک ایک دن اِس انتظار میں گزارتے ہیں کہ اُن کا وکیل اُن کے حق میں عدالت میں پیش ہوکر اپنے دلائل سے متعلقہ جج کو مطمئن کر کے اُنہیں رہائی دلوائے گا۔ اگر وکلاء آئے روز ہڑتال پر ہوں گے تو عدالتوں میں مقدمات کی سماعت کیسے ہو سکے گی۔ معمولی نوعیت کے مقدمات میں ملوث کتنے ہی ملزمان کو وکلاء کی ہڑتالوں کی وجہ سے کئی کئی روز جیل میں گزارنے پڑتے ہیں، حالانکہ پہلی ہی پیشی میں اُن کی ضمانت کے چانسز ہو سکتے ہیں۔ ہڑتال کی بنا پر جب وکیل عدالت میں پیش نہیں ہوتا تو ضمانت پر رہائی یا حتمی طور پر بری ہونے کے خواہش مند ملزمان مایوس ونامراد واپس لوٹتے ہیں اوریوں ان کی کسمپرسی پر ترس آتا ہے۔

ابو سعدیہ سید جاوید علی شاہ امامی،

29/278امام صاحب سیالکوٹ

مزید : اداریہ