کریمنل جسٹس سسٹم میں تفتیشی کا کردار انتہائی اہم ہے،عابد حسین قریشی

کریمنل جسٹس سسٹم میں تفتیشی کا کردار انتہائی اہم ہے،عابد حسین قریشی

لاہور(کرا ئم رپورٹر) سیشن جج لاہور عابد حسین قریشی نے کہا ہے کہ پولیس کی نفری ،عدالتوں کی تعداد اور انفراسٹرکچر کی بہتری کے ساتھ ساتھ ملزمان کے طریقہ واردات میں تبدیلی آئی ہے جن سے نمٹنے کے لئے تفتیش کو جدید خطوط پر استوار کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ دور میں کریمنل جسٹس سسٹم میں تفتیشی افسر کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے اور اگر بروقت کاروائی کی جائے تو گنہگار سزا سے نہیں بچ سکتا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پولیس لائنز قلعہ گجر سنگھ میں انویسٹی گیشن ونگ کے افسران کی تفتیشی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر ایڈیشنل سیشن جج شاہد بشیر، ایس ایس پی انویسٹی گیشن غلام مبشر میکن ،ایڈوکیٹ سپریم علی ضیا ء باجوہ، ڈسٹرکٹ پراسیکوٹر الطاف حسین ، انویسٹی گیشن ونگ کے تمام ڈویژنل ایس پیز، پنجاب فرانزک لیبارٹری کے علاوہ انویسٹی گیشن ونگ کے افسران بھی موجود تھے ۔ایس ایس پی انویسٹی گیشن غلام مبشر میکن نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایسی ورکشاپس کریمنل جسٹس سسٹم، کرائم سین کی اہمیت اور مختلف تکنیکی مراحل کے بارے میں آگاہی فراہم کرنے میں معاون ثابت ہوتی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ مستقبل میں بھی ایسی ورکشاپس کا انعقاد عمل میں لایا جاتا رہے گا تا کہ تفتیشی افسران جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کر کے اصل مجرمان کو کیفر کردار تک پہنچا سکیں۔تقریب سے انچارج کرائم سین یونٹ جازب رومی اور ایڈوکیٹ سپریم کورٹ علی ضیاء باجوہ نے بھی خطاب کیا۔

مزید : علاقائی