چارسدہ ،ترقیاتی سکیموں کیلئے ٹھیکیدار کی طرف سے 21جعلی کال ڈیپازٹ جمع کرنے کا انکشاف

چارسدہ ،ترقیاتی سکیموں کیلئے ٹھیکیدار کی طرف سے 21جعلی کال ڈیپازٹ جمع کرنے ...

چارسدہ (بیورورپورٹ) ٹی ایم اے شبقدر کے 11کروڑ روپے کے ترقیاتی سکیموں کیلئے ٹھیکداروں کی طرف سے 21 جعلی کال ڈیپازٹ جمع کرنے کا انکشاف ۔ کال ڈیپازٹ کی مالیت 25سے 30لاکھ روپے ہے ۔ تحصیل نائب ناظم کی طرف سے فراڈ اور جعل سازی میں ملوث ٹھیکدواروں کے خلاف قانونی چارہ جوئی اور لوکل گورنمنٹ سے لائسنس منسوخ کرنے کا اعلان ۔ تفصیلات کے مطابق ٹی ایم اے شبقدر کے بارہ یونین کونسلوں میں مجموعی طور پر گیارہ کروڑ روپے کے ترقیاتی منصوبوں کی نیلامی کا عمل 27 مارچ کو مکمل ہوا ۔نیلامی اور بولی کے عمل میں ضلع بھر کے ٹھیکداروں نے حصہ لیا۔ قانون کے مطابق نیلامی کے عمل کے بعد گیارہ کروڑ روپے کے 94 ترقیاتی منصوبوں کیلئے ٹی ایم اے شبقدر نے کامیاب ٹھیکدروں کی طرف سے پیش کئے گئے دو فی صد کال ڈیپاذٹ اور آٹھ فی صد ایڈیشنل سیکیورٹی کے بینک ڈیپازٹ بینک بجوائے تو 21 منصوبوں کے بینک کال ڈیپازٹ جعلی نکلے جن میں آٹھ کال ڈیپازٹ سندھ کے ایک نجی بینک کے بنائے گئے تھے مگر اس پر مہر نوشہرہ کینٹ برانچ کا لگا ہو اتھاجبکہ 13 کال ڈیپاذٹ خیبر پختونخوا کے صوبائی بینک سے بنائے گئے تھے جوکہ ہر لحاظ سے جعلی تھے ۔ جعلی کال ڈیپازٹ کی مالیت 25 سے 30 لاکھ روپے بنتی ہے۔ جعلی کال ڈیپازٹ کے حوالے سے شبقدر کے متعلقہ بینکوں نے ٹی ایم اے شبقدر کو تحریری طور پر آگاہ کیا۔ اس حوالے سے تحصیل نائب ناظم غفار اللہ شیخ نے رابطہ کرنے پر بتایا کہ جعل سازی میں ملوث ٹھیکداروں کے خلاف قانونی کاروائی کی جائیگی جبکہ لائسنس کی منسوخی کیلئے لوکل گورنمنٹ سے پر زور مطالبہ کیا جائیگااور اس حوالے سے کسی سے کوئی رعایت نہیں کی جائیگی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر