سعودی ملٹری الائنس کی سربراہی ساکھ کیلئے نقصان دہ‘ راحیل شریف فیصلے پر نظر ثانی کریں‘ راجہ ناصر عباس اور حامد رضاکی پریس کانفرنس

سعودی ملٹری الائنس کی سربراہی ساکھ کیلئے نقصان دہ‘ راحیل شریف فیصلے پر نظر ...

ملتان(جنرل رپورٹر)مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری اور سنی اتحاد کونسل کے سربراہ صاحبزادہ حامد رضا نے مرکزی سیکرٹریٹ میں(بقیہ نمبر32صفحہ12پر )

مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی ملٹری الائنس کے سربراہ کی حیثیت سے جنرل راحیل شریف کا عہدہ قبول کرنا ان کی ساکھ کے لیے نقصان دہ ہے۔پاکستان کے عوام کی اکثریت اس فیصلے سے مطمئن نہیں ۔عالمی تجزیہ نگاردنیا میں شدت پسندی کے فروغ کا ذمہ دار آل سعود کو ٹھہراتے ہیں۔یمن میں بے گناہ افراد پر آگ برسانے والے اس سعودی اتحاد کا حصہ ہیں۔سعودی ملٹری الائنس سعودی مفادات کے تحفظ اور عالم اسلام کے خلاف صیہونی ایجنڈے کی تکمیل کے لیے تشکیل دیا گیاہے۔اس متنازع الائنس سے ان اسلامی ممالک کو دور رکھا گیا جو عالمی دہشت گرد طاقتوں کے خلاف برسر پیکار ہیں۔امریکی حکام کی جانب سے اس امر کا کھلم کھلااظہار کہ یہ اتحاد امریکہ اہداف کی تکمیل کے لیے معاون ثابت ہو گا ہماری آنکھیں کھولنے کے لیے کافی ہے۔انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ کا اتحاد او آئی سی کے تحت قائم کیا جائے تو ہی نتیجہ خیز اور غیر جانبدار قرار دیا جا سکتا ہے۔ جنرل راحیل شریف اس قوم کا فخر ہیں۔دہشت گردی کے خلاف ان کے جرات مندانہ اقدامات وطن عزیز کی تاریخ میں سنہری حروف سے لکھے جائیں گے۔انہیں اپنے فیصلوں میں تمام پہلوں کو مدنظر رکھنا ہو گا۔صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ سعودی عرب کا یہ فوج اتحاد کشمیر ،فلسطین اور برما کے مسلمانوں پر ہونے والے مظالم پر خاموش کیوں ہے؟

ناصر عباس

مزید : ملتان صفحہ آخر