”آئندہ کسی خاتون کے پاس بیٹھا دیکھیں تو پولیس کو مطلع کریں “، برطانوی عدالت نے خواتین کی تصاویر اتارنے والے ملزم کو انوکھی سزا سنا دی

”آئندہ کسی خاتون کے پاس بیٹھا دیکھیں تو پولیس کو مطلع کریں “، برطانوی عدالت ...
”آئندہ کسی خاتون کے پاس بیٹھا دیکھیں تو پولیس کو مطلع کریں “، برطانوی عدالت نے خواتین کی تصاویر اتارنے والے ملزم کو انوکھی سزا سنا دی

  

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن )برطانوی عدالت نے خواتین کی تصاویر اتار کر انٹرنیٹ پر وائرل کرنے والے ملزم کو 16ماہ قید اور آئندہ کسی خاتون کے پاس بیٹھنے سے منع کر دیا ۔

”العربیہ “ کے مطابق برطانیہ کی عدالت نے نوسر باز کوچھپ کر 106خواتین کی تصاویر اتارنے اور انہیں انٹرنیٹ پر پوسٹ کرنے کا جرم ثابت ہونے پر 16 ماہ قید کیساتھ آئندہ کسی خاتون کے پاس بیٹھنے اور موبائل فون اور کیمرہ استعمال کرنے سے منع کردیا ہے۔ عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ اگراس شخص کو آئندہ کسی خاتون کے پاس بیٹھا دیکھیں تو فوری طور پر پولیس کو مطلع کریں.ملزم کو غیر ضروری طور پر ریلوے سٹیشن ، میٹروکے اڈوں اور دیگر مقامات جہاں خواتین کا رش ہو جانے سے بھی روک دیا گیا ہے۔

اسلام آباد کے رہائشی کا بچوں کو پولیو قطرے پلانے سے انکار کردیا اور پھر ۔۔۔۔

61 سالہ برطانوی شہری سیمون لوسی نے انٹرنیٹ پر اپنے فرضی نام’Tubeperve‘ رکھا ہے۔ وہ گذشتہ 16 سال سے لندن میٹرو اور دیگر مقامات پر چپکے سے خواتین کی تصاویر بنانے کے بعد انہیں اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کرتا اور انٹرنیٹ پر پوسٹ کرتا رہا ہے۔

اخباری رپورٹ کے مطابق لوسی نے خواتین کی تصاویر اتارنے کا سلسلہ 13 سال قبل 2003ءمیں شروع کیا اور وہ 2016ءکے آخر میں بے نقاب ہوا۔ گرفتاری کے بعد اسے 16 ماہ قید کی سزا سنائی گئی۔ بعد ازاں عدالت نے خواتین کو ضرر پہنچانے سے بچاو¿ کے لیے ملزم و¿ پر کسی خاتون کے قریب بیٹھنے، کیمرہ استعمال کرنے اور موبائل فون ساتھ رکھنے پر پابندی عاید کی ہے۔

ترک ایئر لائن نے فلمی صنعت میں قدم رکھ لیا ، پاکستانی ہدایتکار کےساتھ مشترکہ فلمسازی کا معاہدہ کر لیا 

عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ملزم آئندہ اپنے پاس ایسا کوئی بھی آلہ جس کی مدد سے تصویر اتاری جا سکے رکھنے کا مجاز نہیں ہو گا اور بغیر کسی حقیقی سفر کے وہ ریلوے سٹیشن، میٹرو کے اڈوں اور دیگر پبلک مقامات جہاں خواتین کا رش ہوسکتا ہے داخل ہونے کا مجاز نہیں۔ اگر وہ حقیقی سفر کے لیے ان مقامات میں آتا ہے تو اسے کسی خاتون کے قریب بیٹھنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ اگر وہ ایسا کرے تو اس کے بارے میں کوئی بھی شخص پولیس کومطلع کرسکتا ہے۔

مزید : بین الاقوامی