’’اس دن رات کو ایک شخص اپنے والدین کی قبر پر گیا تو قریب ہی ایک قبر سے روشنی آتی نظر آئی،گھبرا کر بھاگ گیا،لیکن صبح جا کر دیکھا تو اس قبر پر یہ چیز پڑی تھی جو۔۔۔۔‘‘

’’اس دن رات کو ایک شخص اپنے والدین کی قبر پر گیا تو قریب ہی ایک قبر سے روشنی ...
’’اس دن رات کو ایک شخص اپنے والدین کی قبر پر گیا تو قریب ہی ایک قبر سے روشنی آتی نظر آئی،گھبرا کر بھاگ گیا،لیکن صبح جا کر دیکھا تو اس قبر پر یہ چیز پڑی تھی جو۔۔۔۔‘‘

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن )کراچی کے علاقے علی اکبر شاہ گوٹھ کے55سالہ رہائشی محمد عالم کا کہناہے کہ وہ ایک دن والدین کی قبر پر فاتحہ خوانی کیلئے گیا تو اس نے دیکھا کہ ایک قبر پر لمبے قد والے سفید کپڑوں میں کچھ افراد کھڑے ہیں ۔

محمد عالم نے روزنامہ امت کو گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ”چند ماہ قبل میں رات کو بارش کے دوران والدین کی قبر پر گیا تھا۔ فاتحہ خوانی کے دوران بارش رک گئی تو میں نے وہیں بیٹھ کر قرآن کی تلاوت شروع کردی تھی۔ اس دوران زور سے بجلی کڑکی اور پورا قبرستان روشن ہوگیا۔ اس موقع پر کچھ خوف سا محسوس ہوا لیکن میں نے تلاوت جاری رکھی۔ اس دوران مجھے دور قبرستان کے کونے پر بنی ایک قبر سے روشنی نمودار ہوتی نظر آئی۔ میں نے دیکھا کہ سفید لبادے والے لمبے قد کے کئی افراد قبر پر موجود ہیں۔ یہ منظر دیکھ کر میں خوفزدہ ہوگیا اور والدین کی قبروں کے درمیان دبک کر بیٹھ گیا۔ کافی دیر بعد جب اوسان بحال ہوئے تو گھر آگیا۔ صبح سویرے دوبارہ قبرستان جاکر اس جگہ گیا جہاں رات کو سفید لبادے والے لمبے قد کے افراد نظرا ٓئے تھے۔ میں نے دیکھا کہ وہاں ایک قبر پر گلاب کے پھولوں کی تازہ پتیاں پڑی تھیں۔“

مزید : کراچی