’میرا کتا بار بار میری چھاتی پر اپنے پیر مارتا تھا، بالآخر تنگ آکر ڈاکٹر کے پاس گئی تو اس نے ایسی خوفناک حقیقت بتادی کہ پوری زندگی بدل گئی‘ 33 سالہ نوجوان لڑکی کے ساتھ ایسا واقعہ پیش آگیا کہ انسانی عقل دنگ رہ جائے

’میرا کتا بار بار میری چھاتی پر اپنے پیر مارتا تھا، بالآخر تنگ آکر ڈاکٹر کے ...
’میرا کتا بار بار میری چھاتی پر اپنے پیر مارتا تھا، بالآخر تنگ آکر ڈاکٹر کے پاس گئی تو اس نے ایسی خوفناک حقیقت بتادی کہ پوری زندگی بدل گئی‘ 33 سالہ نوجوان لڑکی کے ساتھ ایسا واقعہ پیش آگیا کہ انسانی عقل دنگ رہ جائے

  

میلبرن (نیوز ڈیسک) انسان سمجھتا ہے کہ اس کی عقل و فہم کے سامنے جانوروں کی ذہنی استعداد کی کوئی وقعت نہیں، مگر سچ تو یہ ہے کہ جانوروں کو بھی قدرت نے ایسی ایسی خوبیوں سے نوازا ہے کہ جن کے بارے میں جان کر عقل انسانی دنگ رہ جاتی ہے۔ نوجوان آسٹریلوی خاتون رینی شینڈلر پر یہ حیرت انگیز انکشاف اس وقت ہوا جب ان کے کتے نے انہیں لاحق کینسر کی بیماری سے آگاہ کردیا، لیکن بدقسمتی سے تب تک بہت دیر ہوچکی تھی۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق رینی کا کہنا ہے کہ وہ بیکسٹر نامی کتے کو گزشتہ سال کے آخر میں اپنے گھر لائیں۔ جب ایک روز یہ کتا اچھل اچھل کر ان کی چھاتی کی جانب لپکنے لگا تو وہ کچھ متفکر ہوگئیں۔ جب وہ خود کو کتے کے پنجوں سے بچانے کی کوشش کررہی تھیں تو اسی دوران انہیں اپنی چھاتی میں ایک ابھار کی موجودگی کا احساس ہوا۔ رینی کا کہنا ہے کہ انہوں نے اس پر پہلے کبھی توجہ نہ دی تھی لیکن کتے نے بار بار ان کی چھاتی کی جانب لپک کر انہیں خبردار کردیا تھا کہ ان کے جسم میں کچھ بھاری گڑ بڑ ہے۔ رینی اپنے معائنے کے لئے ہسپتال گئیں جہاں یہ اندوہناک انکشاف ہوا کہ وہ بریسٹ کینسر کی شکار تھیں، جو کہ فور ٹرپل نیگٹو سٹیج میں پہنچ چکا تھا، یعنی اب ان کے پاس زندہ رہنے کو بہت تھوڑا عرصہ باقی تھا۔

’میں نے سر پر بالوں کو رنگنے کیلئے ہیئر کلر لگایا اور پھر ٹیسٹ کروائے تو دیکھا کہ میرے خون میں۔۔۔‘ نوجوان لڑکی نے انتہائی خوفناک بات کہہ دی، ایسا کام ہوگیا کہ جان کر آپ بھی اپنے بالوں کو رنگنے سے پہلے بار بار سوچیں گے

گزشتہ پانچ ماہ کے دوران ان کے علاج کی ہر ممکن کوشش کی گئی ہے۔ ان کی کیمو تھیراپی کی گئی ہے، میسٹیکٹومی اور ریڈی ایشن سے بھی علاج کیا گیا ہے لیکن کینسر ان کی ہڈیوں، جگر، پھیپھڑوں اور حالیہ میں دماغ تک بھی پہنچ گیا ہے۔ اگرچہ آسٹریلوی ڈاکٹروں نے رینی کو بتادیا ہے کہ اب ان کے پاس زندہ رہنے کو صرف تین ماہ بچے ہیں لیکن وہ اب بھی زندگی کی امید لئے ہوئے ہیں۔

جرمنی کے ایک ماہر ڈاکٹر سے علاج کروانے کے لئے وہ عنقریب روانہ ہونے والی ہیں۔ اس علاج کے لئے انہیں کم از کم ایک لاکھ ڈالر (تقریباً ایک کروڑ پاکستانی روپے) کی ضرورت ہے۔ رینی کی دوست جیکی وائٹس نے ان کی مدد کے لئے ویب سائٹ گو فنڈ می (GoFundMe) پر ایک پیج قائم کیا ہے۔ اس پیج پر گزشتہ چند دنوں کے دوران 40ہزار ڈالر (تقریباً 40 لاکھ پاکستانی روپے) جمع ہوچکے ہیں۔ رینی اور ان کی دوست جیکی کو امید ہے کہ وہ جلد ہی باقی رقم بھی جمع کرلیں گی۔ پورے جسم میں کینسر پھیلنے کے باعث رینی بدترین اذیت سے دوچار ہیں لیکن انہوں نے حوصلہ نہیں ہارا۔ انہیں یقین ہے کہ جرمنی میں علاج کے بعد وہ ٹھیک ہوجائیں گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس