’میں قبرستان کے قریب سے گزر رہا تھا کہ میں نے دیکھا کہ کچھ قبروں پر آگ لگی ہوئی اور میں لوگوں کے ساتھ پانی کی بالٹیاں لے کر پہنچا تو ۔۔۔‘ شہری نے زندگی کا انتہائی حیران کن واقعہ بیان کر دیا

’میں قبرستان کے قریب سے گزر رہا تھا کہ میں نے دیکھا کہ کچھ قبروں پر آگ لگی ...
’میں قبرستان کے قریب سے گزر رہا تھا کہ میں نے دیکھا کہ کچھ قبروں پر آگ لگی ہوئی اور میں لوگوں کے ساتھ پانی کی بالٹیاں لے کر پہنچا تو ۔۔۔‘ شہری نے زندگی کا انتہائی حیران کن واقعہ بیان کر دیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)ابراہیم حیدری قبرستان کے حوالے علاقہ مکین مختلف پراسرار واقعات بیان کرتے ہیں۔ قبرستان سے متصل دکاندار فضل الدین نے بتایا کہ اس قبرستان میں قبضہ مافیا نے گھر بناکر فروخت کردئیے ہیں لیکن ان گھروں میں رہنے والے لوگ پریشانیوں کا شکار رہتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق دکاندار فضل الدین کا کہناتھا کہ پہلے قبرستان میں کالے علم کرنے والے آکر چلہ کشی کرتے تھے۔ پولیس اور علاقہ مکینوں کی جانب سے سختی کے بعد اب قبرستان پر قبضے کرکے عاملوں نے جگہیں لے لی ہیں۔ چند سال قبل قبرستان کے ایک کونے پر ایک عامل نے کٹیا بنالی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ اس قبرستان میں ان کے ساتھ ایک مرتبہ پراسرار واقعہ پیش آیا تھا۔ ایک رات وہ بنگالی پاڑے سے قبرستان کے قریب علی اکبر گوٹھ کی جانب آرہے تھے۔ انہوں نے دور سے قبرستان میں آگ لگی دیکھی، پہلے تو وہ سمجھے کہ جھاڑیوں میں کسی نشہ کرنے والے نے سگریٹ یا جلتی ماچس کی تیلی پھینکی ہوگی، جس سے آگ لگی ہوگی لیکن انہیں چند قبروں پر آگ بھڑکتی نظر آئی۔ انہوں نے علاقے کے لوگوں کو جاکر بتایا تو بہت سے لوگ بالٹیوں اور ڈبوں میں پانی لے کر وہاں پہنچے ،جب قریب جاکر دیکھا کہ وہاں تو کوئی آگ نہیں تھی اور قبرستان میں سناٹا چھایا ہوا ہے۔

مزید : کراچی