کیا دنیا کے امیر ترین آدمی کے موبائل سے شرمناک تصاویر سعودی عرب نے چرائیں؟ نیا ہنگامہ برپاہوگیا

کیا دنیا کے امیر ترین آدمی کے موبائل سے شرمناک تصاویر سعودی عرب نے چرائیں؟ ...
کیا دنیا کے امیر ترین آدمی کے موبائل سے شرمناک تصاویر سعودی عرب نے چرائیں؟ نیا ہنگامہ برپاہوگیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کچھ عرصہ دنیا کے امیر ترین آدمی اور ایمازون کے سربراہ جیف بیزوس کا فون ہیک کر لیا گیا تھا۔ اب جیف بیزوس کے لیے تفتیش کا کام کرنے والے ایک اہلکار نے اس کا الزام سعودی عرب پر عائد کر دیا ہے۔ ویب سائٹ thedailybeast.com کے مطابق جیف بیزوس نے گیون دی بیکر نامی اس تفتیش کار کی خدمات حاصل کی تھیں اور اس کے ذمہ لگایا تھا کہ وہ پتا کرے کہ ان کے فون میں موجود تصاویر، پیغامات اور دیگر ذاتی نوعیت کا ڈیٹا ’نیشنل انکوائرر‘ نامی اخبار تک کیسے پہنچا۔

بیکر نے نے ہیکنگ کی اس کارروائی کو استنبول میں واقع سعودی قونصل خانے میں صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے بعد امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کی کوریج کے ساتھ جوڑا ہے۔ بیکر کا کہنا ہے کہ چیف بیزوس واشنگٹن پوسٹ کے مالک ہیں اور ان کے اس اخبار نے جمال خاشقجی کے قتل کی بھرپور کوریج کی تھی جس کی وجہ سے سعودی عرب نے ان کا فون ہیک کرکے اس میں موجود ڈیٹا لیک کیا جو نیشنل انکوائرر نے شائع کر دیا۔بیکر نے بتایا کہ ”میں نے اپنی تحقیقاتی رپورٹ امریکہ کے وفاقی اہلکاروں کے حوالے کر دی ہے۔“ رپورٹ کے مطابق تاحال بیکر کی طرف سے لگائے گئے اس الزام پر سعودی عرب کی طرف سے کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا۔

مزید : کسان پاکستان