قرضوں کی واپسی کےلئے شہریوںکو ہراساں نہ کیا جائے،لاہور ہائےکورٹ

قرضوں کی واپسی کےلئے شہریوںکو ہراساں نہ کیا جائے،لاہور ہائےکورٹ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے لیزنگ کمپنیوں کواپنے واجبات کی وصولی کے لئے شہریوں کو ہراساں کرنے سے روک دیا۔مسٹر جسٹس کاظم رضا شمسی نے اس سلسلے میں دائر درخواست نمٹاتے ہوئے قرار دیا کہ قانون کے مطابق لیزنگ کمپنیوں کو اپنے قرضوں اور واجبات کی وصولی کے لئے بینکنگ کورٹس سے رجوع کرنا چاہیے اس سلسلے میں فوجداری کارروائی نہیں ہوسکتی ۔فاضل جج نے مزید قرار دیا کہ قرضوں اور واجبات کی وصولی کے لئے فوجداری مقدمات درج نہیں کروائے جاسکتے ۔درخواست گزار اختر حسین نے موقف اختیار کیاتھا کہ لیزنگ کمپنی نے قسط ادا نہ کرنے پر اسکے خلاف تھانہ نصیر آباد لاہور میں مقدمہ درج کرا دیا۔قانون کے تحت قسط ادا نہ کرنے کی صورت میں درخواست گزار اضافی رقم ادا کرنے کو بھی تیار ہے مگر لیزنگ کمپنیاںپولیس کا سہارا لے کر شہریوں کو ہراساں کرنا اپنا وطیرہ بنا چکی ہیں۔سرکاری وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ شہری کے خلاف درج مقدمہ خارج کر دیا گیا ہے۔جس پر عدالت نے ریمارکس دیئے کہ لیزنگ کمپنیاں کس قانون کے تحت اپنے واجبات کی ادائیگی کے لئے شہریوں کو پولیس کے ذریعے ہراساں کر رہی ہیں،عدالت نے ہدایت کی کہ قرضوں کی واپسی کے لئے شہریوںکو غیر قانونی طور پر ہراساں نہ کیا جائے اور لیزنگ کمپنیاں اپنی اقساط کی وصولی کے لئے بینکنگ عدالتوں سے رجوع کریں۔
رےماکس

مزید :

صفحہ آخر -