5سالہ طالب علم کےخلاف خاتون کو گالیاں دینے اور لڑائی جھگڑے کا مقدمہ درج

5سالہ طالب علم کےخلاف خاتون کو گالیاں دینے اور لڑائی جھگڑے کا مقدمہ درج

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگار)لاہور پولیس کی غفلت کا ایک اور نمونہ سامنے آ گیا۔ تھانہ فیکٹری ایریاپولیس نے تیسری جماعت کے 5سالہ طالب علم علی حسن کے خلاف ایک خاتون کو گالیاں دینے اور لڑائی جھگڑے کا مقدمہ درج کرلیا۔ ایڈیشنل سیشن جج نذیر اقبال نے ملزم بچے کی 50ہزار روپے مچلکوں کے عوض ضمانت منظور کر لی جبکہ شریک2ملزم بھائیوں اور بچے کے والد کی عبوری ضمانت 4جون تک منظور کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی ہے۔عدالت پیشی کے موقع پر کمسن بچے علی حسن کا کہنا تھا کے وہ بڑا ہو کر ڈاکٹر بننا چاہتا ہے اوراسے سکول جانا تھا لیکن ابو پولیس کے ڈر سے اسے عدالت لے آئے ہیں۔فاضل عدالت میں گزشتہ روز پانچ سالہ علی حسن کو اس کے والد عبدالحمید اور 2 بھائیوں شہزاد احمد اور شہباز احمد سمیت پیش کیا گیا، ملزمان کے وکیل نے عدالت کو بتایا کے تھانہ فیکٹری ایریا پولیس نے کمسن بچے سمیت دیگر ملزمان کے خلاف ایک خاتون کو گالیاں دینے اور جھگڑا کرنے کا جھوٹا مقدمہ درج کیا ہے جبکہ قانون کے مطابق نا بالغ بچوںکے خلاف مقدمہ درج نہیں کیا جا سکتا ہے لہٰذا عدالت ملزم بچے کی ضمانت منظور کرے جس پرفاضل جج نے ایف آئی آر کاجائزہ لینے اور دلائل سننے کے بعد ملزم علی حسن کی ضمانت منظور کر لی ہے جبکہ بچے کے والد اور دو بھائیوں کی چار جون تک عبوری ضمانت منظور کر لی ہے۔
مقدمہ درج

مزید :

صفحہ آخر -