جعلی ٹریفک وارڈنز کے ساتھی مرکزی ملزم اطہر حبیب کی گرفتاری کیلئے چھاپے

جعلی ٹریفک وارڈنز کے ساتھی مرکزی ملزم اطہر حبیب کی گرفتاری کیلئے چھاپے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

              لاہور (لیاقت کھرل) سندر کے علاقہ میں گرفتار ہونے والے دونوں جعلی ٹریفک وارڈنز تین سال قبل آرمی سے ریٹائر ہوئے۔ سندر اسٹیٹ میں سیکیورٹی گارڈز کی ڈیوٹی کرتے اور گزشتہ آٹھ ماہ سے شہریوں سے لوٹ مار کر رہے تھے۔ پولیس نے گرفتار جعلی ٹریفک وارڈنز کے ساتھی مرکزی ملزم کرنل (ر) اطہر حبیب کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارنے شروع کر دئیے ہیں، انچارج انویسٹی گیشن سندر پولیس انسپکٹر ارشد حسین کاہلو اور تفتیشی افسر رانا ساجد علی نے ” پاکستان“ کو بتایا کہ گرفتار ہونے والے دونوں جعلی ٹریفک وارڈنز اکبر علی اور غلام نبی آرمی سے ریٹائرڈ اور گزشتہ دو اڑھائی سال سے سندر اسٹیٹ میں سیکیورٹی گارڈ کی نوکری کر رہے تھے۔ دونوں ملزمان کو سیکیورٹی کمپنی کے مالک کرنل (ر) اطہر حبیب نے ٹریفک پولیس کی جعلی یونیفارم بنوا کر دیں، ملزمان نے سیکیورٹی کے لئے ملنے والی موٹر سائیکلوں پر سرکاری نمبر پلیٹیں لگوا لیں اور عرصہ آٹھ ماہ سے شہریوںسے لوٹ مار کر رہے تھے۔ پولیس حراست میں گرفتار ملزمان اکبر علی اور غلام نبی نے بتایا کہ انہیں سیکیورٹی کمپنی کے مالک نے اس
 دھندے پر لگایا اور روزانہ دس سے پندرہ ہزار کی دیہاڑی لگاتے تھے۔ پولیس نے گرفتار دونوں جعلی ٹریفک وارڈنز کے خلاف پولیس یونیفارم پہن کر لوٹ مار کرنے، دھوکہ دہی اور اپنے آپ کو پولیس افسر ظاہر کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے۔ دوسری جانب جعلی ٹریفک وارنز کے ہاتھوں لٹنے والے شہریوں کا تھانے میں رش رہا او ر شہریوں نے تھانے جا کر جعلی ٹریفک وارڈنز کے خلاف شکایات درج کروائیں۔ تھانے آنے والے شہریوں اقبال، غلام علی، فغیر حسین، ریاض علی، علی اصغر و دیگر نے ”پاکستان“ کو بتایا کہ گرفتار ہونے والے جعلی وارڈنز ان سے روزانہ دیہاڑی لگاتے تھے اور جعلی ٹریفک وارڈنز کی گرفتاری کی خبر سن کر تھانے آ کر انہیں باقاعدہ پہچان لیا ہے۔

مزید :

علاقائی -