نوجوان کو مسلسل کھانسی کی شکایت اور پھر کھانسی میں خون آنے لگا، ڈاکٹر کے پاس پہنچا تو معائنہ کے بعد اسے پھیپھڑوں میں ایسی چیز نظر آگئی کہ پورا ہسپتال دنگ رہ گیا، کوئی بیماری نہ تھی بلکہ دراصل ۔۔۔

نوجوان کو مسلسل کھانسی کی شکایت اور پھر کھانسی میں خون آنے لگا، ڈاکٹر کے پاس ...
نوجوان کو مسلسل کھانسی کی شکایت اور پھر کھانسی میں خون آنے لگا، ڈاکٹر کے پاس پہنچا تو معائنہ کے بعد اسے پھیپھڑوں میں ایسی چیز نظر آگئی کہ پورا ہسپتال دنگ رہ گیا، کوئی بیماری نہ تھی بلکہ دراصل ۔۔۔

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چین سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان کو بچپن سے ہی کھانسی اور سانس کے مسائل کا سامنا تھا۔ وانگ نامی اس نوجوان کا کہنا ہے کہ جہاں تک اسے یاد پڑتا ہے 6 سے 7 سال کی عمر سے ہی اسے سانس کی خرابی کا مسئلہ لاحق ہو گیا تھا ۔ اکثرو بیشتر اسے شدید کھانسی کے دورے بھی پڑتے تھے۔ یہ سلسلہ گزشتہ تقریباً 20 سال سے جاری تھا۔ حال ہی میں اس کا مسئلہ بہت شدید ہو گیا اور اسے کھانسی کے ساتھ خون بھی آنے لگا۔ صورتحال زیادہ بگڑی تو اس نے بالآخر ہسپتال کا رخ کیا۔

’ لوگ مجھے بھوت کہہ کر بُلاتے ہیں ‘ اس لیے سارا دن چھپ کر گزارتا ہوں، جب 12 سال کا تھا تو ماں یہ کہہ کر چھوڑ گئی کہ۔۔۔ ‘26 سالہ نوجوان کی ایسی حالت کیسے ہوئی؟اس کی کہانی جان کر آپ کی آنکھوں سے بھی آنسو نہ رُکیں

جب ڈاکٹروں نے اس کا معائنہ کیا تو ایک پھیپھڑے میں کوئی چیز پھنسی نظر آئی۔ ڈاکٹروں کا خیال تھا کہ یہ جسم کے باہر سے داخل ہونیوالی کوئی چیز ہے جسے نکالنے کیلئے آپریشن کرنا ضروری تھا۔ ڈاکٹروں کی ایک ٹیم نے ڈاکٹر زوو کانگرین کی قیادت میں وانگ کا آپریشن کیا۔ آپریشن کے ذریعے وانگ کے پھیپھڑے سے جو چیز نکالی گئی اسے دیکھ کر ڈاکٹروں کے لئے بھی اپنی آنکھوں پر یقین کرنا مشکل ہو گیا۔ یہ پین کا کیپ تھا جو کہ گزشتہ 20 سال سے وانگ کے پھیپھڑے میں موجود تھا۔ اس کا اکثر حصہ گل سڑ چکا تھا اور اس کے تحلیل ہوتے دھاتی اجزاءکی وجہ سے ہی وانگ کو کھانسی اور سانس لینے میں شدید دشواری کا سامنا ہو رہا تھا۔

وانگ کا کہنا ہے کہ اسے کچھ کچھ یاد پڑتا ہے کہ بچپن میں اس نے پین کا کیپ نگل لیا تھا، لیکن اسے معلوم نہیں کہ یہ پھیپھڑے میںکیسے چلا گیا اور اس وقت اسے نکالنے کیلئے کیوں کچھ نہیں کیا گیا تھا ۔ آپریشن کے بعد اس کی حالت کافی بہتر ہے اور چند دن بعد اسے گھر جانے کی اجازت مل جائے گی ۔

مزید : ڈیلی بائیٹس